امریکہ میں طوفانی ہواؤں اور تیز بارش نے تباہی مچا دی ، 50 ہلاک

پچاس افراد ہلاک ہو چکے ہیں، جب کہ درجنوں زخمی ہوگئے، کئی گھر ہوا کے بگولوں سے ملبے کا ڈھیر بن گئے اور مواصلات کا نظام درہم برہم ہوگیا۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

امریکی ریاست کینٹکی میں خوف ناک بگولوں نے گھروں کو ملبے کا ڈھیر بنا دیا، بگولوں کی زد میں آ کر 50 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق امریکی ریاست کینٹکی میں بگولے سے ہلاکتوں کی تعداد 50 ہوگئی، غیر ملکی میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ امریکہ کی کئی ریاستوں میں شدید بارشوں اور طوفانی ہواوؤں نے تباہی مچا دی ہے۔


رپورٹس کے مطابق مختلف حادثات میں پچاس افراد ہلاک ہو چکے ہیں، جب کہ درجنوں زخمی ہوگئے، کئی گھر ہوا کے بگولوں سے ملبے کا ڈھیر بن گئے، اور مواصلات کا نظام درہم برہم ہوگیا، متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

امریکی ریاست کینٹکی کے گورنر اینڈی بیشیر نے خبردار کیا ہے کہ رات بھر آنے والے طوفان سے پچاس سے زائد افراد ہلاک ہو گئے ہیں، یہ تعداد 100 تک بڑھ سکتی ہے، انھوں نے اسے ریاست کی تاریخ کا بدترین طوفان بھی قرار دیا۔انہوں نے کہاکہ ہلاک افراد کی تعداد دراصل ستر سے سو کے درمیان ہے۔یہ طوفان امریکہ کی متعدد ریاستوں میں تباہی مچا رہا ہے، ریاست الینوائے میں ایمیزون کے گودام میں بھی کارکن پھنسے ہوئے ہیں۔


حکام نے بتایا کہ جمعہ کی رات جنوبی الینوائے میں ایڈورڈز ول میں ایمیزون کے گودام کو طوفان کے دوران نقصان پہنچا۔ ابھی تک یہ واضح نہیں ہوا ہے کہ چھت گرنے سے کتنے لوگ ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں، تاہم مقامی ایمرجنسی سروسز نے فیس بک پر اسے“بڑے پیمانے پر ہلاکت کا واقعہ”قرار دیا ہے۔
نیو یارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق 100 سے زیادہ لوگ ریاست کینٹکی کے شہر مے فیلڈ میں ایک موم بتی فیکٹری کے اندر موجود تھے، جب طوفان آیا۔ گورنر بیشیر کا کہنا تھا کہ قوی خدشہ ہے کہ ہم ان میں سے درجنوں افراد کو کھو دیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 12 Dec 2021, 8:11 AM