صدر ٹرمپ کی شکست نریندر مودی کی شکست: سی پی آئی

ٹرمپ کی شکست نے دنیا کے سیاسی ، معاشی اور معاشرتی مساوات کے لئے ایک نئی راہ کھول دی ہےاور ڈیموکریٹ پارٹی کے جوبائیڈن کی فتح تنگ نظری اور نسل پرستی کے رجحانات کی شکست ہے۔

تصویر سوشل میڈیا بشکریہ ڈی این اے
تصویر سوشل میڈیا بشکریہ ڈی این اے
user

یو این آئی

کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (سی پی آئی)نے امریکی صدارتی انتخابات کے نتائج پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سبکدوش ہونے والے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی شکست نہ صرف تعصب اور نسل پرستی کی شکست ہے بلکہ ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی کی ذاتی شکست بھی ہے۔

پارٹی نے کہا کہ اس شکست نے دنیا کے سیاسی ، معاشی اور معاشرتی مساوات کے لئے ایک نئی راہ کھول دی ہے۔ پارٹی کے سینئر رہنما اتل کمار انجان نے کہا کہ صدر ٹرمپ کی شکست اور ڈیموکریٹ پارٹی کے جوبائیڈن کی فتح تنگ نظری اور نسل پرستی کے رجحانات کی شکست ہے۔

وزیر اعظم نریندر مودی پہلے ہندوستانی وزیر اعظم ہیں جنہوں نے امریکی صدارتی انتخاب میں کھل کر دخل اندازی کی۔ انہوں نے امریکی شہر ہیوسٹن کی ریلی میں ٹرمپ کی فتح کے لئے نہ صرف اپیل کی بلکہ سینکڑوں کروڑ روپے خرچ کرکے احمد آباد بلاکر 'نمستے ٹرمپ' کا انعقاد کیا۔

پارٹی کے قومی سکریٹری مسٹرانجان نے کہا کہ وزیر اعظم اور ان کی پارٹی بھارتیہ جنتا پارٹی کی غیر ملکی یونٹوں نے ہون ، پوجا وغیرہ کا اہتمام کرکے ٹرمپ کی فتح کے لئے امریکہ میں رہائش پذیر ہندوستانیوں سے کھلے عام اپیل کی۔ حقیقت میں مسٹر ٹرمپ کی شکست مسٹر نریندر مودی کی ذاتی شکست ہے۔ واضح رہے وزیراعظم نریندر مودی نے امریکی شہر ہیوسٹن میں ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے موجود لوگوں سے کہا تھا ’اب کی بار ٹرمپ سرکار‘۔ سفارتی حلقوں میں اس جملہ کو ایک خراب سفارتکاری سے تعبیر کیا گیا تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next