امریکہ میں لاپروائی ہوئی تو کورونا کے ایک لاکھ کیسز روزانہ آئیں گے سامنے: ڈاکٹر فاؤچی

ٹیلی ویژن سے حاصل کی گئی تصاویر کا حوالہ دیتے ہوئے ڈاکٹر فاؤچی نے کہا کہ لوگ بغیر ماسک پہنے اور جسمانی فاصلے کے قانون کی خلاف ورزی کررہے ہیں اور بڑی آسانی کے ساتھ ایک دوسرے سے مل رہے ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

واشنگٹن: وبائی امراض کے امریکی ماہر ڈاکٹر انتھونی فاؤچی نے کہا ہے کہ اگر امریکہ میں ماسک پہننے اور معاشرتی دوری جیسے دیگر قوانین کی سختی سے پابندی نہیں کی جاتی ہے تو امریکہ میں ہر روز کوروناوائرس کے ایک لاکھ نئے کیسز ہوسکتے ہیں۔ امریکہ کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف الرجی اور متعدی امراض کے سربراہ ڈاکٹر فاؤچی نے منگل کے روز کہا ’’اس وقت ہمارے ملک میں ہر روز کورونا وائرس (کووڈ 19) کے 40 ہزار نئے کیسز آرہے ہیں۔ اگر یہ تعداد روزانہ ایک لاکھ تک پہنچ جاتی ہے تو مجھے حیرت نہیں ہوگی۔ اس حوالہ سے میں بہت متفکر ہوں‘‘۔

ٹیلی ویژن سے حاصل کی گئی تصاویر کا حوالہ دیتے ہوئے ڈاکٹر فاؤچی نے کہا کہ لوگ بغیر ماسک پہنے اور جسمانی فاصلے کے قانون کی خلاف ورزی کررہے ہیں اور بڑی آسانی کے ساتھ ایک دوسرے سے مل رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ عوامی مقامات پر ماسک پہنیں اور معاشرتی دوری جیسے ضابطوں پر عمل کریں۔ ایسا کرنے سے ہم گھر سے نکلنے کے بعد بھی محفوظ رہ سکتے ہیں۔

قانل غور ہے کہ امریکہ میں یہ وبا خطرناک روپ کرتا جارہاہے اور اب تک 26لاکھ سے زائد لوگ لاکھ اس سے متاثر ہوچکے ہیں۔اس وبا سے امریکہ میں 1۔27لاکھ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سینٹر برائے سائنس اینڈ انجینئرنگ (سی ایس ایس ای) کے جاری کردہ تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق امریکہ میں کورونا سے مرنے والوں کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر کے 1،27،286 ہوگئی ہے جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد 26 لاکھ کو عبور کرکے 26،28،091 کرچکی ہے۔

Published: 1 Jul 2020, 3:11 PM
next