افغانستان: 35 ایئرپورٹ کے ملازمین نے دیا استعفیٰ، 8 ماہ سے نہیں ملی تھی تنخواہ

ملازمین مالی مسائل کا شکار ہیں، طالبان حکومت نے گزشتہ 8 ماہ سے تنخواہ نہیں دی ہے، اگر ایئرپورٹ ملازمین کی تنخواہ کی ادائیگی وقت پر نہیں کی جاتی ہے تو آئندہ دنوں میں استعفوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔

قندھار ایئرپورٹ
قندھار ایئرپورٹ
user

قومی آوازبیورو

افغانستان کے قندھار علاقہ میں احمد شاہ بابا انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے کئی ملازمین نے مہینوں سے تنخواہ اور محنتانہ کی ادائیگی نہ ہونے کے سبب استعفیٰ دے دیا ہے۔ خامہ پریس کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال اگست میں افغانستان پر طالبان کے قبضہ کرنے کے بعد سے اب تک کم از کم 35 ایئرپورٹ کے ملازمین نے استعفیٰ دے دیا ہے۔

استعفیٰ دینے والے ملازمین کا کہنا ہے کہ وہ مالی بحران کے شکار ہیں۔ طالبان حکومت نے انھیں گزشتہ آٹھ ماہ سے تنخواہ نہیں دی ہے۔ ذرائع کے مطابق اگر ایئرپورٹ ملازمین کی تنخواہ کی ادائیگی وقت پر نہیں کی جاتی ہے تو آنے والے دنوں میں استعفے کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔


بڑے پیمانے پر ایئرپورٹ ملازمین کے استعفے پر طالبان کے ٹرانسپورٹیشن اور شہری ہوابازی وزارت نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ ملازمت چھوڑنے والے ملازمین ہاؤس کیپر، ہیلپرس اور چوکیدار تھے۔ ابھی یہ پتہ نہیں چل پایا ہے کہ ملازمین کو ادائیگی کی گئی یا نہیں۔

واضح رہے کہ انٹرنیشنل فیڈریشن آف ریڈ کراس اینڈ ریڈ کریسنٹ سوسائٹیز (آئی ایف آر سی) نے گزشتہ ہفتے متنبہ کیا تھا کہ افغانستان حال میں زمین پر سب سے خراب انسانی بحران کا سامنا کر رہا ہے، جس میں تقریباً 20 ملین لوگ خوردنی عدم تحفظ کا سامنا کر رہے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔