اردن میں سیاحوں پر حملہ

اردن میں رومی زمانے کے ایک قدیم عمارت کے قریب سیاحوں پر خنجر سے کیےگئے ایک حملے میں آٹھ سیاح زخمی ہو گئے ہیں۔ اردن کا شمار خطے کی محفوظ ترین ممالک میں ہوتا ہے۔

اردن میں سیاحوں پر حملہ
اردن میں سیاحوں پر حملہ

ڈی. ڈبلیو

اردن کی پولیس نے بتایا ہے کہ آٹھ سیاحوں پر خنجر سے حملہ کرنے کا واقعہ جریش نامی شہر میں پیش آیا۔ یہ شہر دارالحکومت عمان سے پچاس کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔بتایا گیا ہے کہ یہ افراد اس شہر میں رومی دور کی ایک قدیم عمارت کی سیاحت میں مصروف تھے، جب ان پر حملہ کیا گیا۔ یہ شہر اس عمارت کی وجہ سے خاص شہرت رکھتا ہے۔

پولیس کے مطابق حملے میں زخمی ہونے والوں میں یہ سیاح، ان کا گائیڈ اور ان کی سلامتی پر مامور افراد شامل ہیں۔ان میں سے تین کا تعلق میکسیکو جبکہ ایک کا سوئٹزرلینڈ سے ہے۔

عوامی تحفظ کے ادارے کے ترجمان نے بتایا،''دوپہر کے وقت ایک شخص نے سیاحوں پر حملہ کیا۔ زخمی ہونے والوں میں ٹور گائیڈ اور وہ محافظ بھی شامل ہے، جس نے ان سیاحوں کو بچانے کی کوشش کی۔‘‘ بیان میں مزید کہا گیا کہ حملہ آور کو فوراً حراست میں لے لیا گیا اور زخمیوں میں سے تین کی حالت تشویشناک ہے۔

اردن کی ایک مقامی خبر رساں ادارے نے اس واقعے کی ایک ویڈیو جاری کی ہے، جس میں ایک زخمی کو خون میں لت پت زمین پر پڑے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ اردن میں گزشتہ برسوں کے دوران سیاحت میں اضافہ ہوا ہے اور اس ملک میں اس طرح کے واقعات کم ہی رونما ہوئے ہیں۔