اٹلی میں اموات اب نو ہزار سے زائد، ایک دن میں 969 مریض ہلاک

اٹلی میں کورونا کے باعث ایک دن میں تقریباﹰ ہزار اموات کے بعد ہلاکتیں نو ہزار سے زائد ہو گئی ہیں۔مریضوں کی عالمی تعداد پونے چھ لاکھ سے زائد جبکہ ہلاکتیں بھی تقریباﹰ ساڑھے چھبیس ہزار ہو چکی ہیں۔

ایک دن میں 969 مریض ہلاک، اٹلی میں اموات اب نو ہزار سے زائد
ایک دن میں 969 مریض ہلاک، اٹلی میں اموات اب نو ہزار سے زائد
user

ڈی. ڈبلیو

اطالوی دارالحکومت روم میں ملک کے شہری دفاع کے ادارے نے جمعہ ستائیس مارچ کی شام بتایا کہ اٹلی میں کورونا وائرس کی نئی قسم کے مریضوں کی مجموعی تعداد چار ہزار چار سو کے اضافے کے ساتھ اب ساڑھے چھیاسی ہزار ہو گئی ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اٹلی نے ان مریضوں کی تعداد کے حوالے سے اب چین کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے، جہاں سے اس وبائی مرض کا آغاز ہوا تھا۔

کسی بھی ملک میں ایک دن میں ہلاکتوں کا نیا ریکارڈ

اٹلی کی شہری دفاع کی ایجنسی نے بتایا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے لگنے والی بیماری کے ہاتھوں یورپی یونین کے رکن اس ملک میں صرف آج جمعے کے روز مزید 969 مریض انتقال کر گئے۔ یوں اٹلی میں کووِڈ انیس کی وجہ سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد بھی اب نو ہزار ایک سو سے تجاوز کر گئی ہے۔

یہ تعداد دنیا بھر میں کورونا وائرس کی وجہ سے کسی ایک ملک میں انسانی ہلاکتوں کی سب سے زیادہ تعداد ہے، جو چین میں اسی وجہ سے اموات کا تقریباﹰ تین گنا بنتی ہے۔ اس کے علاوہ اٹلی میں آج مزید تقریباﹰ ایک ہزار مریضوں کی موت کووِڈ انیس کی وجہ سے کسی بھی ملک میں صرف ایک دن میں آج تک ریکارڈ کی گئی سب سے زیادہ تعداد بھی ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے آج جمعے کی شام دنیا بھر میں کووِڈ انیس کے مریضوں کی تعداد کے نصف ملین سے زائد ہو جانے کی تصدیق کرتے ہوئے اپیل کی کہ تمام متاثرہ ممالک میں طبی شعبے کے ان کارکنوں کی حفاظت کے لیے زیادہ سے زیادہ حفاظتی ساز وسامان مہیا کیا جانا چاہیے، جو لاکھوں مریضوں کی جانیں بچانے کی انتھک کوششیں کر رہے ہیں۔

ساتھ ہی ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل نے خبردار کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ متاثرہ ممالک کو مریضوں کے علاج کے لیے ایسی ادویات استعمال کرنے سے بھی گریز کرنا چاہیے، جن کا کووِڈ انیس کے خلاف مؤثر اور کارگر ہونا ابھی ثابت نہیں ہوا۔