یوگی حکومت نے کارکنوں کے لئے بسوں کی اجازت نہ دیکر گھٹیا سیاست کا ثبوت دیا: پائلٹ

سچن پائلٹ نے کہا کہ کانگریس کی قومی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے اتر پردیش کے وزیر اعلی سے 1000 بسیں چلانے کی اجازت مانگی تھی لیکن اتر پردیش کی حکومت نے اجازت نہ دے کر اپنی گھٹیا سیاست کا ثبوت دیا

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جے پور: راجستھان کے نائب وزیر اعلی سچن پائلٹ نے اتر پردیش کی بی جے پی حکومت کو غریب مخالف قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس کی قومی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے اترپردیش کے وزیر اعلی سے 1000 بسیں چلانے کی اجازت مانگی تھی لیکن اتر پردیش کی حکومت نے اجازت نہ دے کر اپنی گھٹیاسیاست کا ثبوت دیا۔

پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر پائلٹ نے آج یہاں ریاستی کانگریس ہیڈکوارٹر پر صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ تارکین وطن کارکنوں کو ان کے گھروں تک پہچانے کے لئے کانگریس پارٹی کی طرف سے اتر پردیش کی حکومت سے 500 بسوں کو غازی آباد سے اور 500 بسوں کو نوئیڈا سے چلانے کی اجازت مانگی تھی۔ انہوں نے کہا کہ راجستھان بارڈر سے کارکنوں کو اترپردیش لے جانے کے لئے بسوں کا انتظام بھی کانگریس پارٹی کی طرف سے کی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ تارکین وطن کارکنوں کو اتر پردیش میں بسوں کو جانے سے روکنے کے لئے اترپردیش حکومت نے بہت ہی منفی رویہ اپناتے ہوئے ان بسوں کو رسائی کی اجازت نہیں دی۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی اترپردیش حکومت نے کانگریس پارٹی کی طرف سے دی گئی بسوں کی فہرست پر سوال اٹھائے اور اتر پردیش میں کانگریس لیڈروں پر فرضی مقدمے درج کرکے انہیں گرفتار بھی کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اتر پردیش کی بی جے پی حکومت نے کانگریس پارٹی کی طرف سے تارکین وطن کارکنوں کے لئے دستیاب کروائی جانے والی بسوں کو اجازت دینے کے لئے بعض رکھتے ہوئے اس سلسلے میں فٹنس سرٹیفکیٹ، گاڑی ڈرائیوروں کے لائسنس، پرمٹ سمیت کئی شرائط لگا دی۔

پائلٹ نے کہا کہ بحران کے وقت میں اگر اتر پردیش کی حکومت کی طرف سے مدد کا ہاتھ بڑھانے والوں کو خوشی کے ساتھ قبول کیا جاتا تو یہ انسانیت کے مفاد میں ہوتا اور اس کورونا انفیکشنکے وقت میں ہم سب کو یکجہتی کے ساتھ کارکنوں کی مدد کرنی چاہئے تھی۔ انہوں نے کہا کہ صاف نیت سے کام کرنے والا کام کرنا چاہتا ہے، وہ کرتا ہے لیکن جو کام نہیں کرنا چاہتا ہے وہ کام نہ کرنے کے سو بہانے بناتا ہے۔ سیاست میں پہلی بار ایسا دیکھنے کو مل رہا ہے کہحکمراں کی طرف اپوزیشن پر الزام لگائے جا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اترپردیش حکومت نے اتر پردیش کانگریس کمیٹی کے ریاستی اجے کمار للو اور بہت سے کانگریس لیڈروں پر غیر قانونی طریقے سے ایف آئی آر درج کرکے گرفتار کیا جوانتہائی قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو کانگریس کارکن عوام کی خدمت میں مصروف ہیں ان کو اترپردیش حکومت اذیت دے رہی ہے۔

اس موقع پر ریاستی کانگریس کے ترجمان اور ریاست کے وزیر ٹرانسپورٹ پرتاپ سنگھ کھچریاواس نے کہا کہ اترپردیش حکومت کی درخواست پر کوٹہ میں پھنسے طالب علموں کو گھر جانے کی اجازت راجستھان حکومت کی طرف سے دی گئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ اب بی جے پی جھوٹے پروپیگنڈے کر رہی ہے کہ اترپردیش حکومت کو راجستھان حکومت کی طرف سے ڈیزل کے پیسے بھرنے کے لئے خط نہیں لکھا گیا۔

    Published: 22 May 2020, 10:11 PM