این ڈی اے نے معیشت کو کیا برباد، بہار میں 19 لاکھ نوکری دینے کا عدہ جھوٹا: راہل

راہل گاندھی نے این ڈی اے حکومت پر ملک کی معیشت کو برباد کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ بحران کے اس دور میں بہار میں 19 لاکھ نوکری دینے کا جھوٹا وعدہ کر کے بی جے پی نوجوانوں کو گمراہ کر رہی ہے

تصویر اے آئی سی سی
تصویر اے آئی سی سی
user

یو این آئی

نوادہ، بھاگلپور: کانگریس کے سابق قومی صدر راہل گاندھی نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) زیر قیادت قومی جمہوری اتحاد ( این ڈی اے) حکومت پر ملک کی معیشت کو برباد کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہاکہ اس بحران کے دور میں بہار میں 19 لاکھ نوکری دینے کا جھوٹا وعدہ کر کے بی جے پی نوجوانوں کو گمراہ کر رہی ہے۔

راہل گاندھی نے نوادہ اور بھاگلپور ضلع میں مہا گٹھ بندھن امیدواروں کے حق میں جمعہ کو منعقدہ انتخابی اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مرکزکی نریندر مودی حکومت اور بہار کی نتیش حکومت نے بڑے پیمانے پر ملک اور ریاست کی معیشت کو بربادکرنے کاکام کیا ہے ۔ ایسے میں نوجوانوں کو روزگارمہیا کر پانا یقینی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم مودی سے پوچھا جانا چاہئے کہ سال 2014 کے لوک سبھا انتخاب کے وقت ہر سال دو کروڑ نوجوانوں کو نوکری دینے کے ان کے وعدے کا کیا ہوا۔

کانگریس لیڈر نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ وزیراعلیٰ نتیش کمار نے بہار کے نوجوان لڑکے لڑکیوں کیلئے کچھ بھی نہیں کیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اگر این ڈی اے بہار میں پھر سے حکومت بننے کے بعد انیس لاکھ نوکریاں دینے کا وعدہ کر رہی ہے تو اس سے پوچھا جانا چاہئے کہ تب وہ اتنے دنوں سے کیا کر رہی تھی ۔

راہل گاندھی نے کہا کہ مودی اور نتیش کمار نے آج تک عوام کیلئے نہیں بلکہ کچھ چنندہ طبقات کیلئے ہی کام کیا ہے ۔ مودی کو کبھی بھی کسان، نوجوان اور غریبوں کی فکر نہیں رہی۔ مودی نے ہمیشہ مکیش امبانی اور اڈانی جیسے صنعت کاروں کیلئے کام کیا ہے ۔ ملک کے ایئر پورٹ ، ریلوے اور دیگر عوامی املاک امبانی اور اڈانی کو فروخت کئے جارہے ہیں۔

کانگریس کے سابق قومی صدر نے الزام عائد کیا کہ مودی حکومت نے نوٹ بندی کر کے چھوٹے کاروباریوں ، کسان اور غریبوں کی کمر توڑ دی ہے ۔ اس کے بعد کاروباریوں کیلئے اشیاءاور سروس ٹیکس ( جی ایس ٹی ) ایک اور بڑا جھٹکا ثابت ہوا ۔ انہوں نے کہاکہ ان سب کے توسط سے غریبوں اور چھوٹے کاروباریوں کی جیب سے روپے نکال کر امبانی اور اڈانی جیسے بڑے صنعت کاروں کو دیئے گئے ۔ اتنا ہی نہیں مودی حکومت نے ان سرمایہ داروں کے ہزاروں کروڑ روپے کے قرض بھی معاف کر دیئے ۔

راہل گاندھی نے کہاکہ نوٹ بندی کے بعد صرف غریب ، مزدور اور عام آدمی کو ہی بینک شاخوں اور اے ٹی ایم کے باہر قطار میں کھڑے ہونے کو مجبور ہونا پڑا جبکہ مودی حکومت کے پسند کے امبانی اور اڈانی جیسے صنعت کاروں کو تو اسکی ضرورت ہی نہیں تھی ۔ انہوں نے کہاکہ مرکز کی متحدہ ترقی پسنداتحاد ( یو پی اے ) حکومت کے وقت ملک کی معیشت تیز رفتاری سے آگے بڑھ رہی تھی لیکن مودی حکومت نے اسے پوری طرح سے برباد کر دیا ۔

کانگریس لیڈر نے وزیراعظم نریندر مودی پر ان کے صنعت کار دوستوں کو خوب فائدہ پہنچانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ ملک کے سبھی نیوز چینلوںپر چوبیس گھنٹے مودی کو دکھایا جاتا ہے لیکن ان کی (راہل گاندھی کی) تقریروں کو نہیں دکھایا جاتا۔ یہ مودی اور کچھ کارپوریٹ گھرانوں کا زبردست گروہ بن جانے کی وجہ سے ہورہاہے ۔ انہوںنے کہاکہ لوگوں کے من میںان کے تئیں غلط تصور بنانے کیلئے نیوز چینلوں پر ہمیشہ انہیں نشانہ بنایاجاتاہے ، جس کا فائدہ مودی کو ملتا ہے ۔

راہل گاندھی نے الزام لگایا کہ چینی فوج نے ہندوستان کے 1200 کیلومیٹر علاقوں پر قبضہ کرلیاہے لیکن وزیراعظم مودی انہیں باہر نکالنے کیلئے کچھ بھی نہیں کر رہے ہیں۔ مودی ملک کے لوگوں کو یہ کہہ کر گمراہ کررہے ہیں کہ چین کی فوج ہندوستانی علاقے کے میں داخل ہی نہیں ہوئی ہے۔ انہوں نے مودی کے بیان کی لداخ میں حال ہی میں شہید ہوئے بہار کے جوانون کو وہ سلام کرتے ہیں پر حملہ بولا اور کہاکہ سچائی ہے کہ مودی نے فوج کے مفاد میں کچھ کیا ہی نہیںہے ۔ وزیراعظم ہمیشہ غریب ، کسان اور فوج کی باتیں کیا کرتے ہیں لیکن سچائی یہ ہے کہ وہ کام صرف کچھ صنعت کاروں کیلئے ہی کرتے ہیں۔

اس موقع پر راشٹریہ جنتا دل ( آر جے ڈی ) کے سنیئر لیڈر اور مہا گٹھ بندھن کے وزیراعلیٰ کے دعویدار تیجسوی پرساد یادو نے اپنے وعدوں کو دہراتے ہوئے کہاکہ ان کی حکومت بنتے ہی کابینہ کی پہلی میٹنگ میں ہی 10 لاکھ نوجوانوں کو نوکری دینے کی تجویز کو منظور دی دی جائے گی ۔ انہوں نے کہاکہ وہ جھوٹاوعدہ نہیں کررہے ہیں۔حکومت بنتے ہی وہ اپنے وعدوں کو پورا کرکے دکھائیںگے۔ انہوں نے کہاکہ ابھی سیاست میں ان کاکافی طویل کیریئر ہے اس لئے انہیں کوئی جھوٹا وعدہ کر نے کی ضرورت نہیںہے ۔

یادو نے کہاکہ آرجے ڈی صدر لالو پرساد یادو 09 نومبر 2020 کو جیل سے باہر آجائیں گے۔ اس کے لئے ضمانت عرضی دائر کر دی گئی ہے ۔ اس کے بعد دس نومبر کو وزیراعلیٰ نتیش کمار کے لئے اقتدار کا آخری دن ہوگااور اس بار کے اسمبلی انتخاب میں بہار کی عوام نے انہیں الوداع کہنے کا من بنا لیا ہے ۔

قومی آواز اب ٹیلیگرام پر پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next