پرائیویٹائزیشن کے نام پر ملک کے اہم وسائل کو فروخت کیا جارہاہے: ورون گاندھی

ہمارے ملک کے اجداد نے اپنی قربانیاں دے کر اس ملک کو آزادی دلائی ہے۔ ہم اسے برباد ہوتا نہیں دیکھ سکتے۔ ہمیں ملک کو بچانا ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

اترپردیش کے ضلع پیلی بھیت سے بی جے پی کے رکن پارلیمان ورون گاندھی نے سیاست میں آئی بدعنوانی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت ملک مشکل دور سے گذررہا ہے۔

اپنے پارلیمانی حلقے پیلی بھیت کے دو روزہ دورے پر گئے ورو ن نے ایک پروگرام میں کہا کہ ملک میں مہنگائی آسمان چھورہی ہے۔ بے روزگاری شباب پر ہے۔ اوپر سے پرائیویٹائزیشن کے نام پر ملک کے اہم وسائل کو فروخت کیا جارہاہے۔


انہوں نے کہا کہ’سوچنے والی بات یہ ہے کہ جب ہر چیز فروخت کردی جائے گی تو ملک کا کیا ہوگا۔ ہمارے ملک کے اجداد نے اپنی قربانیاں دے کر اس ملک کو آزادی دلائی ہے۔ ہم اسے برباد ہوتا نہیں دیکھ سکتے۔ ہمیں ملک کو بچانا ہے۔ ملک اس وقت مشکل دور سے گذررہا ہے۔

رکن پارلیمان نے اپیل کی کہ کورونا اور اومیکرون کے پیش نظر بدعنوان سیاست کے تئیں بھی بیدار ہونے کی ضرورت ہے۔ آج سیاست مفاد پرستی اور بدعنوانی میں ملوث ہے۔ ورون نے نوجوانوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ سیاست میں ایماندار لوگوں کو لائیے۔ ایسے لیڈروں کو منتخب کریں جو آپ کی پریشانی کو اپنی پریشانی سمجھ کر دور کریں۔ اس دوران انہوں نے علاقے کے تقریبا ڈیڑھ درجن گاوں کا دورہ کیا۔


یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ ورون گاندھی نے اپنی ہی حکومت کے خلاف اسٹینڈ لیا ہو ۔ ان کے بارے میں یہ کہا جا رہا ہے کہ ان کی بی جے پی قیادت سے ناراضگی ہے اور وہ اسی وجہ سے مستقل حزب اختلاف کی زبان استعمال کرتے نظر آ رہے ہیں ۔ یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ گزشتہ کئی مہینوں کے دوران ان کی پرینکا اور راہل گاندھی کے ساتھ نزدیکیاں بڑھی ہیں ۔ واضح رہے راہل ورون کے تایا کے بیٹے ہیں ۔ (یو این آئی انپٹ کے ساتھ)

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔