اتر پردیش میں سابق گورنر عزیز قریشی کے خلاف ملک سے بغاوت کا مقدمہ درج

اے ایس پی سنسار سنگھ کے مطابق کہ آکاش سکسینہ نے سابق گورنر عزیز قریشی کے خلاف شکایت درج کی تھی اور ابتدائی تفتیش کے بعد ایک ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ ہم قانون کے مطابق آگے کی کارروائی کریں گے۔

عزیز قریشی، تصویر آئی اے این ایس
عزیز قریشی، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

رام پور: سابق گورنر عزیز قریشی پر اترپردیش پولیس نے چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ کے خلاف مبینہ توہین آمیز ریمارکس پر بغاوت کا مقدمہ درج کیا ہے۔ بی جے پی لیڈر آکاش سکسینہ کی شکایت پر اتوار کی رات رام پور ضلع کے سول لائن پولیس اسٹیشن میں ایف آئی آر درج کی گئی۔

کانگریس کے سینئر رکن 81 سالہ عزیز قریشی، 2014-15 میں میزورم کے گورنر بھی رہ چکے ہیں۔ وہ ہفتہ کو سماج وادی پارٹی کے رہنما محمد اعظم خان کی اہلیہ تزئین فاطمہ سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کے لیے رام پور آئے تھے۔ بعد ازاں میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مبینہ طور پر یوگی حکومت کا موازنہ شیطانوں (راکشاشوں) سے کیا۔


بی جے پی رہنما آکاش سکسینہ نے پولیس کو اپنی شکایت میں یہ بھی کہا کہ "قریشی کے ریمارکس کو سوشل میڈیا پر پسند کیا جا رہا ہے، جس سے دونوں برادریوں کے درمیان کشیدگی پیدا ہو سکتی ہے اور یہاں تک کہ فرقہ وارانہ فسادات بھی ہو سکتے ہیں۔" عزیز قریشی پر سیکشن 153اے (مذہب، ذات وغیرہ کی بنیاد پر دو گروہوں کے درمیان دشمنی کو فروغ دینا)، 153بی (قومی اتحاد کے لیے نقصان دہ)، 124اے (غداری) اور 505 بی1۔ (خوف پیدا کرنے کا ارادہ) کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

رام پور کے ایڈیشنل سپرنٹنڈنٹ پولیس (اے ایس پی) سنسار سنگھ کے مطابق "آکاش سکسینہ نے یوپی کے سابق گورنر عزیز قریشی کے خلاف شکایت درج کی تھی اور ابتدائی تفتیش کے بعد ایک ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ ہم قانون کے مطابق آگے کی کارروائی کریں گے۔"

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔