’اردو جرنلزم کورس‘ پر خطرہ لاحق! صرف 3 بچوں نے بھرا آئی آئی ایم سی کا فارم

آئی آئی ایم سی کے اردو کورس میں اس سال صرف 3 بچوں نے داخلہ کے لئے درخواست دی ہے جبکہ یہاں اردو کے لئے 15 سیٹیں ہیں۔ ادارے نے مجبوری میں اس کے داخلہ کی تاریخ بڑھا کر 29 جولائی کر دی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

صحافت کی ہر دور میں اہمیت رہی ہے اور ہر دور میں صحافی کو محترم سمجھا گیا ہے۔ آج کے دور میں اس پیشہ کا دائرہ کافی وسیع ہو گیا ہے اور اب صحافت صرف اخبار تک محدود نہیں ہے بلکہ ٹی وی چینل، ویب سائٹ،سوشل میڈیا کے علاوہ بڑے بڑے کارپوریٹ گھرانوں میں بھی صحافیوں کی ضرورت رہتی ہے۔ صحافی بننے کے لئے اب ہر یونیورسٹی اور کالج میں اس کے کورسز ہوتے ہیں اور بڑی تعداد میں طلباء اس میں داخلہ لیتے ہیں۔ صحافتی شعبہ میں انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ماس کمیونکیشن(آئی آئی ایم سی) ملک کا سب سے اچھا ادارہ تصور کیا جاتا ہے اور اس میں داخلہ لینا بھی کافی اعزاز کی بات سمجھی جاتی ہے۔ لیکن افسوس کی بات ہے کہ جہاں انگریزی اور ہندی کے کورسز میں داخلہ کے لئے مارا ماری رہتی ہے وہیں اردو میں جب سے کورس شروع ہوا ہے تب سے ہی اس کی سیٹیں پوری نہیں ہوئی ہیں اور آدھے سے زیادہ سیٹیں ہر سال خالی رہ جاتی ہیں۔

ملک کے اس مایہ ناز صحافتی ادارہ ’انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ماس کمیونکیشن‘ (آئی آئی ایم سی) کے اردو کورس میں اس سال اب تک صرف تین بچوں نے داخلہ کے لئے درخواست دی ہے جبکہ یہاں اردو کے لئے 15 سیٹیں ہیں۔ ادارے نے مجبوری میں اس کے داخلہ کی تاریخ آگے بڑھا دی ہے اور اب اردو پی جی ڈپلومہ کورس سال 20-2019 کے نئے داخلہ شیڈیول کے مطابق 29 جولائی تک فارم جمع کئے جا سکتے ہیں اور 31 جولائی کو اس کے لئے امتحان ہوں گے۔

فارم کے لیے یہاں کلک کریں... درخواست فارم برائے اردو صحافت کورس 20-2019

ادارہ کے سینئر ذمہ دار مسٹر چاؤلہ نے بتا یا کہ اردو کے اس کورس میں کبھی بھی سیٹیں پوری نہیں بھری ہیں اور چھ طلباء سے زیادہ نے کبھی داخلہ نہیں لیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس کورس کے لئے سالا نہ فیس 47 ہزار روپے ہے اور اس میں داخلہ کے لئے اہلیت صرف بی اے ہے۔ علاوہ ازیں امیدوار کو اردو آنی چاہئے۔ اس میں تین امیدواروں کی فیس آدھی کر دی جاتی ہے اگر ان کا تعلق او بی سی سے ہو یا پھر ان کے والد کی آمدنی کم ہو۔ آئی آئی ایم سی اردو کے ایک سابق طلباء سے جب کم بچوں کے داخلہ لینے کی وجہ پوچھی تو اس نے بتایا کہ ’’ دوری ایک وجہ ہو سکتی ہے کیونکہ یہ جے این یو کے قریب ہے اس لئے اتنی دور بچے جانا نہیں چاہتے ‘‘۔ اس نے بتایا کہ والدین اور خود بچوں کو اس پیشہ کی اہمیت نہیں معلوم ہے۔

واضح رہے کہ یہ کورس بہت ہی معیاری ہے اور صحافت کی ہر معیاری ملازمت کے لئے اس ڈپلومہ کو سب سے زیادہ اہمیت دی جاتی ہے۔جن طلبا ء کو صحافت اپنا پیشہ بنانا ہے تو پھر ان کو اس میں داخلہ لینا چاہئے۔ والدین کو بھی یہ سمجھنا چاہئے کہ اب اس پیشہ کا دائرہ بہت وسیع ہو گیا ہے اور اب کارپوریٹ گھرانوں میں بھی صحافیوں کی ضرورت ہوتی ہے اور اچھے صحافی بننے کے لئے آئی آئی ایم سی کا یہ پی جی ڈپلومہ کورس بہت اچھا ہے۔

Published: 19 Jul 2019, 5:10 PM