'ہندو نمبر ایک ڈھونگی ہیں‘، گجرات کے گورنر آچاریہ دیوورت کے بیان پر ہنگامہ

گجرات کے گورنر آچاریہ دیوورت کے اس بیان پر تنازع کھڑا ہو گیا ہے جس میں انہوں نے ہندوؤں کو اول درجہ کا ڈھونگی یعنی منافق قرار دیا ہے۔

گورنر آچاریہ دیوورت، تصویر آئی اے این ایس
گورنر آچاریہ دیوورت، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

گجرات کے گورنر آچاریہ دیوورت کے ذریعہ ہندوؤں کو منافق قرار دینے کے بیان نے ایک تنازع کھڑا کر دیا ہے۔ انہوں نے یہ بیان بدھ کو نرمدا ضلع کے پویچا گاؤں میں منعقدہ 'آرگینک فارمنگ' کے موضوع پر ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے دیا۔

ریاست کے دو بڑے اخبارات نے گورنر آچاریہ دیوورت کے بیان کا ذکر کیا ہے۔ انہوں نے کہا ’’لوگ 'جے گاؤ ماتا' کا نعرہ لگاتے ہیں لیکن وہ گائے کو اس وقت تک ہی گوشالہ میں رکھتے ہیں جب تک وہ دودھ دیتی رہتی ہے۔ جیسے ہی وہ دودھ دینا بند کر دیتی ہے، تو وہ اسے سڑکوں پر چھوڑ دیتے ہیں۔ اس لیے میں کہتا ہوں کہ ہندو نمبر ایک کے ڈھونگی ہیں۔ ہندو مذہب اور گائے ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں لیکن یہاں لوگ خود غرضی کی وجہ سے 'جے گاؤ ماتا' کا نعرہ لگاتے ہیں۔‘‘


آچاریہ دیوورت نے مزید کہا ’’لوگ مندروں، مسجدوں، گرجا گھروں، گرودواروں میں جا کر خدا سے دعا کرتے ہیں تاکہ خدا آپ سے خوش ہو جائے۔ میں کہتا ہوں کہ اگر آپ آرگینک فارمنگ کی طرف بڑھیں گے تو خدا آپ سے اس طرح بھی خوش ہوگا۔‘‘

انہوں نے کہا ’’میں سائنسی ثبوت کے ساتھ کہہ رہا ہوں کہ آپ کیمیائی کھاد کے استعمال سے جانوروں کو مار رہے ہیں۔ اگر آپ آرگینک فارمنگ کو اپنائیں گے تو آپ جانوروں کو زندگی دیں گے۔‘‘

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔