اب کورونا وائرس کہہ رہا ہےکہ “ میں پھرآونگا- میں پھر آونگا” :ادھو ٹھاکرے کا فڑنویس پرطنز

کورونا کی زنجیر توڑنے کا ایک حل لاک ڈاؤن ہے لیکن مہاراشٹر حکومت کی لاک ڈاؤن کی قطعی نیت نہیں ہے کیونکہ غریبوں کا چولہا ٹھنڈا ہو گا چولہا اس لئے کہا کیونکہ گیس مہنگا ہو گیا ہے۔

فائل تصویر آئی اےاین ایس 
فائل تصویر آئی اےاین ایس
user

یو این آئی

مہاراشٹرا کے وزیراعلی ادھو ٹھاکرے نے اسمبلی میں حزب اختلاف کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے سابق وزیراعلیٰ دیویندر فڑنویس پر طنزکرتے ہوئے کہا کہ، اب کورونا وائرس کہہ رہا ہےکہ " میں پھرآونگا- میں پھرآونگا" واضح رہے کہ اقتدار سے ہاتھ دھونے کے بعد فڑنویس کا یہ جملہ کہ " می پنہا یین - می پنہا یین (میں پھرآونگا- میں پھر آونگا)کافی زیربحث رہا اور اس جملے کو لیکر اکثر انھیں مذاق کا مضوع بنایا جاتا رہا ہے۔

گورنر کے خطاب پر اپنی تقریر کے آغاز میں وزیراعلی ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ اپوزیشن کے تمام سوالوں کے جواب ہمارے پاس موجود ہیں۔ اس موقع پر انہوں نے اسمبلی میں جواب کے دوران اپنے فیس بک لائیو پر فڑنویس کی طرف سے کی جانے والی تنقید کا بھی جواب دیا۔


"میں کورونا دور میں فیس بک لائیو کرتا تھا۔ اس فیس بک لائیو آراء سے موصولہ معلومات کے مطابق ، اس فیس بک لائیو کی وجہ سے، مہاراشٹر کے لوگوں نے مجھے اپنے خاندان کا ممبر سمجھنا شروع کیا ، یہ میری زندگی کی سب سے بڑا سرمایہ ہے"۔ فیس بک لائیو سے میں مہاراشٹر کے لوگوں کے گھروں تک پہنچا ہوں،جو عوام کے لیے باعث صبر ثابت ہوا۔ وزیر اعلی نے کورونا دور کے اسکینڈل اور الزامات کی تنقید کا بھی جواب دیا۔ یہ ایک وائرس ہے ، اس وائرس نے کہا کہ میں دوبارہ آؤں گا ، میں دوبارہ آؤں گا اور کورونا وائرس دوبارہ آیا ، یہ کہتے ہوئے کہ وزیر اعلی نے اپوزیشن لیڈر دیویندر فڑنویس کو ایوان میں طنز کا نشانہ بنایا۔

بی جے پی کی جانب سے شیو سینا کے ہندوتو پر اٹھائے جانے والے سوال پر سخت موقف اختیار کرتے ہوے ادھو نے کہا کہ ،" ہمیں اپنے ہندوتو پر فخر ہے، ہمیں کسی کو ہندوتو سکھانے ک ضرورت نہیں"۔ انھوں نے کہا کہ شیوسینا ہندوتوا پرقائم ہے اور وہ کبھی اپنے ہندوتوا سے غافل نہیں رہے گی اس لئے ہمیں ہندوتوا کاسبق سکھانے کی ضرورت نہیں۔ اس ضمن میں بابری مسجد کی شہادت کا ذکر کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ بابری مسجد کی شہادت پر شیوسینا سربراہ بال ٹھاکرے نے کہا تھا کہ اگر بابری مسجد شیوسینکوں نے منہدم کی ہےتو مجھے اس پر فخر ہے اس لئے ہمیں ہندوتو یاد نہ دلایا جائے ۔ بی جے پی پر حملہ کرتے ہوئے ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ کشمیر میں افضل گرو کو شہید کہنے والوں کے ساتھ سرکار سازی کرنا درست ہے اور ہمیں ہندوتوا سکھاتے ہیں ۔ ہم ہندوتوا پر قائم ہے سمجھوتہ بی جے پی نے ختم کیا تھا۔


آج مہاراشٹر ایوان اسمبلی کے بجٹ اجلاس میں گورنر کے خطبہ استقبالیہ پر مہاراشٹر کے وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے نے کورونا سے متعلق بھی کہا کہ میں نے کورونا کے دوران عوام کو فیس بک لائیو کے معرفت پیغام دینے کی کوشش کی اور وہ مثبت اثرات کا حامل رہا ہے۔انہوں نےکہا کہ وہ سب سے کورونا اصول پر عمل کرنے کی اپیل کرتے ہیں ۔ ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ ریاستی سرکار کو بدنام کر کے دیگر ریاست کو آگے بڑھانے کا کام کیا جارہا ہے، کورونا میں اموات کی تعداد و اعداد و شمار کو کبھی پوشیدہ نہیں رکھا گیا اور کورونا ٹیسٹ کے اصل اعداد و شمار پیش کئے ہیں۔انہوں نےکہس کہ اگر جھوٹ بولنا ہوتا تو کبھی بھی بولا جا سکتا تھا لیکن ان کے خون میں جھوٹے بولنے کے جراثیم نہیں ہیں۔

کسان قانون پر ادھو ٹھاکرےنے مرکزی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے سوال کیا کہ " کیا کسان دہشت گرد ہے؟ اگر کسان کے ساتھ ظلم ہو رہا ہے تو بی جے پی والوں کو بھارت ماتا کی جئے بولنے کا بھی حق نہیں ہے" ۔ انھوں نے کہا کہ کسانوں کی آمدنی دوگنا ہو گی لیکن یہ عالم ہے کہ مہنگائی بڑھ گئی ہے اور پٹرول کی قیمت بڑ ھ گئی ہےلیکن کسانوں کی آمدنی نہیں ۔د یویندر فڑنویس کو چیلینج کرتے ہوئے ادھو ٹھاکرے نے ایوان میں کہا کہ ودربھ کبھی تقسیم نہیں ہو گا یہ مہاراشٹر کا حصہ ہے اس کی ترقی کے لئے کام ضرور کیاجائے گا ۔


کورونا کے لئے وزیر اعظم نے اچانک لاک ڈاؤن کیا اس دوران ہم نے مہاجر مزدوروں کو گھر جانے کی اجازت کے لئے کئی مرتبہ فون کیا جس وقت لاک ڈاؤن کی ضرورت تھی اس وقت لاک ڈاؤن کھول دیا گیا۔ مہاجر مزدوروں کو ہم نے اناج اورڈاکٹر تک مہیا کیے، کورونا میں عوام کو سہولت دینے کے لئے وزیر اعلی ریلیف فنڈ کے ساتھ پردھان منتری پی ایم کیئر فنڈ کا حساب کون دے گا اس معاملے میں کسی کو سوال پوچھنے کی اجازت نہیں ہے کسی میں ہمت نہیں ہے کسی نے سوال پوچھا تو وہ غدار وطن ہو گا ۔

ادھو ٹھاکرے نے بتایا کہ ، ریاست میں کورونا پر قابو پانے کے لئے بہتر اقدامات کئے گئے ممبئی کے کستوربا اور پونہ میں کورونا مرکز اورطبی جانچ کے مراکز تھے، ممبئی میں بیس سے پچیس ہزار جانچ ہوتی ہیں ۔ کورونا مریضوں کوڈائیلسس کی سہولت بھی دی گئی ۔ کورونا کی زنجیر توڑنے کا ایک ہی حل لاک ڈاؤن ہے لیکن ہماری لاک ڈاؤن کی قطعی نیت نہیں ہے کیونکہ غریبوں کا چولہا ٹھنڈا ہو گا چولہا اس لئے کہا کیونکہ گیس مہنگا ہو گیا ہے۔


انھوں نے کہا کہ ، "ہم نےجو مہم شروع کی ہے ’میں محفوظ تو میرا کنبہ محفوظ ہے‘اس مہم میں اپنے ریاست کے عوام کی فکرکرنا ہےکیونکہ ہم ں اپنے عوام سے محبت کرتےہیں۔‘‘ انہوں نے کہا کہ اس آفت او ر ہنگامی کورونا حالات میں سیاسی کھیل نہ کھیلو ،عوام کی زندگی سےکھیل مت کرو ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں مل جل کر اپنی غلطیوں کا ازالہ کرنا ہوگا۔ لاک ڈاؤن میں حالات دوسرے تھے لیکن اب حالات اس کے برعکس ہے اگر لاک ڈاؤن سے محفوظ رہنا ہے توہاتھ دھونا، ماسک کا استعمال کرنا ضروری ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔