سری نگر حملہ: 2 پولیس اہلکار زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسے

پیر کی شام کو زیون پانتھ چوک سری نگر کے قریب ملی ٹینٹوں نے نویں بٹالین آئی آر پی سے وابستہ اہلکاروں کی گاڑی پر فائرنگ کی جس وجہ سے 14 اہلکار زخمی ہوئے۔

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

ضلع سری نگر کے زیون علاقے میں جنگجوﺅں کی فائرنگ میں زخمی ہوئے 2 پولیس اہلکار بادامی باغ فوجی اسپتال میں زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ بیٹھے ہیں پولیس ذرائع نے بتایا کہ زیون پانتھ چوک سری نگر میں ملی ٹینٹوں نے آرمڈ پولیس گاڑی پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں 14 اہلکار زخمی ہوئے جن میں سے بعد میں دو کی اسپتال میں موت واقع ہوئی اُن کا کہنا تھا کہ حملے میں زخمی ہوئے اہلکاروں کو طبی امداد فراہم کی جارہی ہیں۔

پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ ’پیر کی شام کو زیون پانتھ چوک سری نگر کے قریب ملی ٹینٹوں نے نویں بٹالین کشمیر آرمڈ پولیس سے وابستہ اہلکاروں کی گاڑی پر فائرنگ کی جس وجہ سے 14 اہلکار زخمی ہوئے جنہیں علاج ومعالجہ کی خاطر فوری طورپر نزدیکی اسپتال منتقل کیا گیا‘۔


انہوں نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے آس پاس علاقوں کو محاصرے میں لے کر حملہ آوروں کی بڑے پیمانے پر تلاش شروع کی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ زخمیوں سے چار اہلکاروں کی حالت نازک بنی ہوئی ہے اور اُنہیں فوجی اسپتال بادامی باغ میں بھرتی کیا گیا ۔

مذکورہ ذرائع نے زخمی ہوئے اہلکاروں کی شناخت اسسٹنٹ سب انسپکٹر غلام حسن، کانسٹیبل سجاد احمد، کانسٹیبل رمیز احمد، کانسٹیبل بشمبر داس،سلیکشن گریڈ کانسٹیبل سنجے کمار، سلیکشن گریڈ کانسٹیبل وکاس شرما، کانسٹیبل عبدالمجید، کانسٹیبل مدثر احمد، کانسٹیبل روی کانتھ، کانسٹیبل شوکت علی، کانسٹیبل ارشید محمد ، سلیکشن گریڈ کانسٹیبل شفیع علی، کانسٹیبل ستویر شرما اور کانسٹیبل عادل علی کے بطور کی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔