آسام: انتہا پسندوں کے حملے میں دو مویشی اسمگلروں کی موت

پولیس نے بتایا کہ فائرنگ کے تبادلے میں پکڑے گئے دو مبینہ اسمگلر سمیت چار پولیس اہلکار گولی لگنے سے زخمی ہوئے۔

علامتی فائل تصویر یو این آئی
علامتی فائل تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

مغربی آسام کے کوکراجھار ضلع میں منگل کی صبح مشتبہ عسکریت پسندوں کی جانب سے پولیس کی گاڑی پر نشانہ لگا کر کیے گئے حملے میں دو مبینہ مویشی اسمگلروں کو ہلاک کر دیا گیا۔

آسام پولیس کے ذرائع نے بتایا کہ اکبر بنجارہ اور سلمان بنجارہ کو میرٹھ میں ایک کیس کے سلسلے میں گرفتار کیا گیا تھا اور ان کے خلاف آٹھ ماہ قبل غیر ضمانتی وارنٹ جاری کیا گیا تھا۔


پولیس نے دعویٰ کیا کہ وہ پیر کی شام اکبر اور سلمان کو ہند۔بھوٹان سرحد پر سنکوش ندی کے کنارے جانوروں کی اسمگلنگ کے راستوں کی نشاندہی کرنے کے لیے لے گئی تھی۔انہوں نے کہا ’’جب ہم جام دوار نامی جگہ پر پہنچے تو ہماری گاڑی پر شدید فائرنگ شروع کر دی گئی، جس کے بعد پولیس نے جوابی کارروائی کی۔

پولیس نے بتایا کہ فائرنگ کے تبادلے میں پکڑے گئے دو مبینہ اسمگلر سمیت چار پولیس اہلکار گولی لگنے سے زخمی ہوئے۔


جس کے بعد پولیس نے جائے وقوعہ سے ایک اے کے 47 اسالٹ رائفل کے ساتھ دو میگزین، 35 گولہ بارود اور 28 راؤنڈ خالی گولے برآمد کئے۔واضح رہے کہ مبینہ طور پر مویشیوں کے اسمگلروں کی پولیس حراست میں موت کا یہ پہلا معاملہ ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔