ٹرمپ اور ان کے حامیوں نے اب تک ہار نہیں مانی، ملک گیر احتجاج کا منصوبہ

شکست تسلیم کرنے سے انکار پر مصر صدر ڈونیلڈ ٹرمپ کے حامیوں نے بظاہر ملک بھر میں احتجاجی ریلیوں کے ذریعہ عوام کے انتخابی فیصلے پر اثر انداز ہونے کا ارادہ کر لیا ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نیویارک: شکست تسلیم کرنے سے انکار پر مصر صدر ڈونیلڈ ٹرمپ کے حامیوں نے بظاہر ملک بھر میں احتجاجی ریلیوں کے ذریعہ عوام کے انتخابی فیصلے پر اثر انداز ہونے کا ارادہ کر لیا ہے۔ دوسری طرف پنسلوینیا، جارجیا اور دیگر اہم ریاستوں کی عدالتوں میں انتخابی عذر داریاں دائر کر کے چیلنج کرنے کی کارروائی شروع کر دی ہے۔

ہر چند کہ کئی اہم ریاستوں میں ابھی بھی ووٹوں کی گنتی اور نتائج کی سرکاری طور پر تصدیق نہیں ہو سکی ہے ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار جوزف بائیڈن 7 کروڑ سے زائد عام ووٹوں سےمنتخب صدر قرار پاچکے ہیں۔ ضابطے کے مطابق الیکٹورل کالج جو 538؍ الیکٹورل ووٹوں پر مشتمل ہے، اگلے مہینے اپنے ووٹوں کا استعمال کرنے کی رسمی کارروائی کرے گا،

دوسری طرف صدر ٹرمپ نے مختلف بے قاعدگیوں اور قانونی عذرداریوں کا جواز بناتے ہوئے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا مطالبہ کرتے ہوئے جوزف بائیڈن کے انتخاب کو چیلنج کر دیا ہے۔ حالانکہ بعض ریاستی عدالتوں نے ڈونالڈ ٹرمپ کی انتخابی مہم کی جانب سے دائر کردہ عذر درایاں خارج بھی کر دی ہیں لیکن ٹرمپ کے حامی احتجاجی ریلیاں نکالنے اور قومی عدالت عظمیٰ سپریم کورٹ اپنا مقدمہ لے جانا چاہتے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next