ملک میں تاناشاہی ہے، دو وزراء اعلی کے ہمراہ لکھیم پور جاؤں گا: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے کہا کہ وہ لکھیم پور جائیں گے اور وہاں کی زمینی حقیقت جاننے کی کوشش کریں گے، کیونکہ ابھی تک زمینی حقیقت کسی کو نہیں معلوم ہے۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے راہل گاندھی / تصویر ٹوئٹر
پریس کانفرنس سے خطاب کرتے راہل گاندھی / تصویر ٹوئٹر
user

سید خرم رضا

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کانگریس کے دو وزراء اعلی کے ساتھ آج لکھیم پور کھیری واقعہ کی زمینی حقیقت جاننے کے لئے وہاں جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ کوشش کریں گے، کیونکہ وہ صرف تین لوگ ہیں جبکہ دفعہ 144 میں چار سے زیادہ لوگوں کے جمع ہونے پر پابندی ہوتی ہے اس لئے حکومت کو انہیں نہیں روکنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ویسے تو اتر پردیش کی حکومت نے ان کے چھتیس گڑھ کے وزیر اعلی بھوپیش بگھیل کو اکیلے بھی نہیں جانے دیا۔

راہل گاندھی نے کہا کہ ملک میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ تاناشاہی ہے کیونکہ کسانوں پر منظم حملے ہو رہے ہیں، پہلے زمینوں پر قبضہ کا قانون اور اب تین زرعی قوانین۔ راہل گاندھی نے کہا کسان دہلی کی سرحد پر مہینوں سے احتجاج کر رہے ہیں اور اب کسانوں کو قتل کیا جا رہا ہے، ان کو جیپ کے نیچے کچلا جا رہا ہے اور کچلنے والے کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جار ہی۔ مرکزی وزیر کے بیٹے پر الزام ہے کہ مبینہ طور پر اس نے کسانوں کو جیپ سے کچلا ہے لیکن اس کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہو رہی۔


راہل گاندھی نے کہا کہ وزیر اعظم اتر پردیش کی راجدھانی لکھنؤ جاتے ہیں، لیکن ان کے پاس لکھیم پور کھیری جانے کا وقت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا لیکن وہ (راہل گاندھی) لکھیم پور جائیں گے اور وہاں کی زمینی حقیقت جاننے کی کوشش کریں گے، کیونکہ ابھی تک زمینی حقیقت کسی کو نہیں معلوم ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ وہاں جا کر مرنے والوں کے اہل خانہ سے ملنا چاہتے ہیں اور ان کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کر نا چاہتے ہیں۔

ذرائع ابلاغ سے ناراض نظر آئے راہل گاندھی نے کہا کہ حقیقت میں یہ کام ان کا ہے کہ وہ سچائی کو سامنے لائیں، لیکن ذرائع ابلاغ یہ کام نہیں کر رہا۔ انہوں نے کہا یہ کیسا انصاف ہے کہ ہم لوگوں کو اتر پردیش جانے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے، جبکہ کچھ لوگوں کو جانے کی اجازت دی گئی ہے۔


راہل گاندھی نے کہا کہ کانگریس کی کوشش ہے کہ وہ عوام کو حقیقت سے روشناس کرائے، آج کسانوں کے ساتھ چوری ہو رہی ہے، چھوٹے تاجروں کے ساتھ چوری ہو رہی اور مہنگائی کے ذریعہ عوام کے ساتھ چوری ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا وہ حکومت کو بتانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ جمہوری نظام کے حفاظتی ڈھانچے کو بند نہ کریں، نہیں تو بہت پریشانی ہوگی، مجروموں کے خلاف کارروائی کریں اور حزب اختلاف جو مدے اٹھا رہا ہے اس کو غور سے سنیں۔

پرینکا گاندھی کی حراست پر راہل گاندھی بولے کہ وہ پرینکا کے لئے اتر پردیش نہیں جا رہے وہ کسانوں کے مسئلہ کی وجہ سے جا رہے ہیں اور جہاں تک ان کے گھر والوں کے ساتھ ہاتھا پائی وغیرہ کی بات ہے تو اس کے لئے ان کے گھر والوں کو سہنے اور برداشت کرنے کی ٹریننگ دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی جو آواز اٹھا رہی ہے وہ امید کو زندہ رکھنے کی ایک کوشش ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ حکومت پر دباؤ بناتے رہیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔