این ڈی اے میں خواتین کے داخلہ کے لئے نظام مئی 2022 تک ہوگا تیار

وزارت دفاع کی طرف سے کپیٹن شانتنو شرما کے ذریعہ جج سنجے کشن کول کی صدارت والی بنچ کے سامنے دائر حلف نامہ میں کہا گیا ہے کہ خواتین کے لئے ضروری نظام مئی 2022 تک تیار کیا جا سکے گا۔

علامتی تصویر، یو این آئی
علامتی تصویر، یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: نیشنل ڈیفنس اکیڈمی (این ڈی اے) کے ذریعہ فوج کی تینوں ونگس میں خواتین کے داخلہ پر غور کیا جائے گا اور اس کے لئے مئی 2022 تک ضروری نظام تیار کرلیا جائے گا۔ وزارت دفاع نے سپریم کورٹ میں حلف نامہ دائر کرکے اپنا منصوبہ شیئر کیا ہے۔

وزارت دفاع کی طرف سے کپیٹن شانتنو شرما کے ذریعہ جج سنجے کشن کول کی صدارت والی بنچ کے سامنے دائر حلف نامہ میں کہا گیا ہے کہ حالانکہ این ڈی اے میں داخلہ کے لئے سال میں دو بار امتحان منعقد کیا جاتا ہے لیکن خواتین کے لئے ضروری نظام مئی 2022 تک تیار کیا جا سکے گا۔


حلف نامہ میں کہا گیا ہے کہ خواتین کو این ڈی اے کے ذریعہ فوج میں داخلہ دینے میں آنے والی دقتوں اور خواتین امیدوار کی بلا رخنہ تربیت کے لئے وسیع پیمانہ پر تیاریاں کی جارہی ہیں۔ وزارت دفاع نے کہاکہ اس کے لئے خواتین امیدواروں کے لئے طبی معیارات طے کرنے سمیت تمام پہلووں کے لئے معیارت مرتب کئے جارہے ہیں۔ وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ اگر تربیت کے کسی بھی معیار کے ساتھ سمجھوتہ کیا گیا تو اس کا میدان جنگ میں مسلح افواج کی صلاحیت پر منفی اثر پڑے گا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔