جھارکھنڈ میں اگلی حکومت بی جے پی کی ہی بنے گی، رگھوور داس کو اب بھی بھروسہ!

رگھوور داس نے یہاں صحافیوں سے بات چیت میں دعوی کرتے ہوئے کہا کہ وہ ابھی رجحان اور قیاس آرائیوں پر کوئی ردعمل نہیں دیں گے لیکن یہ تو طے ہے کہ جھارکھنڈ میں ایک بار پھر بی جے پی کی حکومت بنے گی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جمشیدپور: جھارکھنڈ کے وزیراعلی اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر رگھوورداس نے ریاست کی 81 سیٹوں کی جاری گنتی میں ان کی پارٹی کے 53 سیٹوں پر پچھڑنے کے باوجود دعوی کیا ہے کہ ریاست میں اگلی حکومت بی جے پی کی ہی بنے گی۔

داس نے یہاں صحافیوں سے بات چیت میں دعوی کرتے ہوئے کہا کہ وہ ابھی رجحان اور قیاس آرائیوں پر کوئی ردعمل نہیں دیں گے لیکن یہ تو طے ہے کہ جھارکھنڈ میں ایک بار پھر بی جے پی کی حکومت بنے گی۔ انہوں نے کہا کہ آج شام تک ووٹوں کی گنتی کے حتمی نتیجے آنے کے بعد وہ رانچی میں پریس کانفرنس کریں گے۔

جمشید پور مشرق سے بی جے پی امیدوار داس نے پارٹی سے باغی ہوئے سابق وزیر سریو رائے کے اثر کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا، ’’اگر جمشید پور مشرق اسمبلی حلقے میں رائے کا کوئی اثر ہوتا تو میں اس سیٹ سے آگے نہیں چل رہا ہوتا۔’’ انہوں نے امیدواروں کے زیادہ ترسیٹوں پر پیچھے چلنے کے بارے میں پوچھنے پر کہا کہ ایسا بی جے پی مخالف ووٹوں کا پولرائیزیشن ہونے کی وجہ سے ہو رہا ہے۔

واضح رہے کہ ووٹوں کی گنتی کے ابھی تک جاری رجحان میں بی جے پی امیدوار 81 میں سے محض 28 سیٹوں پر آگے چل رہے ہیں۔ جبکہ 53 سیٹوں پر کانگریس، جھارکھنڈ مکتی مورچہ، جھارکھنڈ وکاس مورچہ، آل جھارکھنڈ اسٹوڈنٹس یونین سمیت دیگر سیاسی پارٹیوں کے امیدوار سبقت بنائے ہوئے ہیں۔