بھارت جوڑو یاترا کا پیغام نفرتوں کو ختم کرنا اور وطن کو جوڑنا ہے: ڈاکٹر فاروق عبداللہ

فاروق عبداللہ نے کہا کہ ملک میں جو نفرتیں پھیلائیں جا رہی ہے اور تمام مذاہب کے درمیان دوریاں پیدا کی جا رہی ہیں، بھارت جوڑو یاترا کا پیغام انہی نفرتوں کو ختم کرنا اور وطن کو جوڑنا ہے

<div class="paragraphs"><p>جموں کشمیر نیشنل کانفرنس کے سربراہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی بھارت جوڑو یاترا میں شرکت کی فائل تصویر / ٹوئٹر</p></div>

جموں کشمیر نیشنل کانفرنس کے سربراہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی بھارت جوڑو یاترا میں شرکت کی فائل تصویر / ٹوئٹر

user

یو این آئی

سری نگر: جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے بدھ کے روز کہا کہ محض الیکشن میں کامیابی حاصل کرنے کے لئے ملک میں جو نفرت کا ماحول پیدا کیا جا رہا ہے وہ ایک بہت ہی خطرناک اور تشویشناک رجحان ہے، جو اس ملک کو تباہی اور بربادی کی طرف لے کر جائے گا۔ ان باتوں کا اظہار موصوف نے عشمقام پہلگام میں نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران کیا۔

بھارت جوڑو یاترا سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ اس وقت ملک میں بے حد نفرتیں پھیلائیں جارہی ہے، ہندوں، مسلمانوں، سکھوں، عیسائیوں اور دیگر مذاہب کے درمیان دوریاں پیدا کی جا رہی ہیں۔ ملک کے آئین کی خلاف ورزی ہو رہی ہے اور یہ رجحان اس ملک کی بنیادوں کو ہلا رہا ہے اور بھارت جوڑو یاترا کا پیغام نفرتوں کو ختم کرنا اور وطن کو جوڑنا ہے جسے تفرت کے ذریعے توڑا گیا ہے۔


ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ یہ ملک یہاں کے رہنے والے ہر ایک باشندے کا ہے پھر چاہئے اُس کا مذہب کوئی بھی اور وہ کسی بھی زبان میں کیوں نہ بات کرتا ہو۔ یہ ملک اُسی صورت میں ترقی کرسکتا ہے جب ہم سب ایک ہوکر نہیں رہیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں صدر نیشنل کانفرنس نے کہا کہ ہمارے یہاں بہت مشکلات آئے، ایسے مشکلات بھی آئے جب ہماری پنڈت بھائیوں کو یہاں سے ہجرت کرنی پڑی اور میں دعا کرتا ہوں کہ یہاں ایسا ماحول قائم ہو کہ وہ اپنی من مرضی یہاں واپس آکر اپنے گھروں میں پھر سے خوشی اور عزت کیساتھ رہ سکیں۔

انہوں نے کہاکہ ملک میں اپوزیشن کے اتحاد کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ ہم میں ہمت ، صبر اور اُمید ہونی چاہئے اور اوپر والے پر پورا ایمان ہونا چاہئے۔ اپوزیشن بھی ایک دن متحد ہوگی لیکن جب اوپر والی کی مرضی ہوگی۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;