ملک بھر میں کورونا ٹیکہ کاری کے پہلے مرحلہ کا آغاز، آج 3 لاکھ لوگ لگوائیں گے ٹیکہ

وزیر اعظم مودی نے ملک کے باشندگان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’ٹیکہ کاری مہم کے پہلے مرحلہ میں تین کروڑ لوگوں کو ٹیکہ لگایا جائے گا۔ دوسرے مرحلہ میں ہمیں اس تعداد کو 30 کروڑ تک لے جانا ہے۔

وزیر اعظم مودی تصویر سوشل میڈیا / @BJP4India
وزیر اعظم مودی تصویر سوشل میڈیا / @BJP4India
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے آج ہندوستان میں کورونا ویکسین کی ٹیکہ کاری مہم کا آغاز کر دیا۔ پہلے مرحلہ کے دوران آج 3 لاکھ لوگوں کو ٹیکہ لگایا جا رہا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے ویکسینیشن پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ ’’آج کے دن کا پورے ملک کو بے صبری سے انتظار تھا۔ کتنے مہینے سے ملک کے ہر گھر میں بچے، بوڑھے، جوان سبھی کی زبان پر یہ سوال تھا کہ کورونا ویکسین کب آئے گی۔ اب ویکسین آ گئی ہے اور یہ بہت ہی کم وقت میں تیار ہوئی ہے۔

وزیر اعظم مودی نے ملک کے باشندگان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’ٹیکہ کاری مہم کے پہلے مرحلہ میں تین کروڑ لوگوں کو ٹیکہ لگایا جائے گا۔ دوسرے مرحلہ میں ہمیں اس تعداد کو 30 کروڑ تک لے جانا ہے۔ جو بزرگ ہیں، جو مہلک بیماری میں مبتلا ہیں، انہیں اس مرحلہ میں ٹیکہ لگے گا۔ آپ تصور کر سکتے ہیں، 30 کروڑ سے زیادہ آبادی کے دنیا میں صرف تین ہی ملک ہیں، خود ہندوستان، چین اور امریکہ۔ تاریخ میں اتنے بڑے پیمانے پر ٹیکہ کاری مہم پہلے کبھی نہیں چلائی گئی۔

وزیر اعظم مودی نے کہا کہ ’’دنیا کے 100 سے بھی زیادی ایسے ملک ہیں جن کی آبادی 3 کروڑ سے کم ہے اور ہندوستان ٹیکہ کاری کے اپنے پہلے مرحلہ میں ہی 3 کروڑ لوگوں کو ٹیکہ لگا رہا ہے۔ میں یہ یاد دہانی کرانا چاہتا ہوں کہ کورونا ویکسین کی دو خوراکیں دی جانی بہت ضروری ہیں۔ پہلی اور دوسری خوراک کے درمیان ایک مہینے کا وقفہ رکھا جانا ضروری ہے۔ پہلی ڈوز لینے کے دو ہفتوں کے اندر کورونا کے خلاف ضرورت قوت مدافعت پیدا ہو جائے گی۔ ہندوستان کی ٹیکہ کاری انتہائی انسانی قدروں پر مبنی ہے۔ کیونکہ سب سے زیادہ ضرورت مندوں کو سب سے پہلے ٹیکہ دیا جا رہا ہے۔‘‘

وزیر اعظم مودی نے کہا کہ ’’ہر ہندوستانی کو اس بات پر فخر ہوگا کہ دنیا بھر کے تقریباً 60 فیصد بچوں جو زندگی کی حفاظت کے لئے ٹیکے لگتے ہیں وہ ہندوستان میں ہی تیار ہوتے ہیں۔ کورونا کے خلاف جنگ کے دوران ہندوستان نے خود اعتماد اور خود انحصار کو حاصل کیا۔ ہندوستان کے ویکسین سائنسدان، ہمارا نظام طب دنیا بھر کے لئے معتمد ہے۔ ہم نے یہ اعتماد اپنے ٹریک ریکارڈ سے حاصل کیا ہے۔‘‘

انہوں نے کہا کہ ’’ہمارے سائنسدان اور ماہرین جب دونوں میڈ ان انڈیا ویکسین کی سلامتی اور اثرات کے حوالہ سے پر اعتماد ہوئے تبھی انہوں نے اس کے ایمرجنسی استعمال کی اجازت فراہم کی۔ اس لئے ملک کے باشندگان کو کسی بھی پروپگینڈا یا منفی تشہیر سے بچ کر رہنا ہے۔ ہم دوسروں کے کام آئیں، یہ بے لوس جذبہ ہمارے اندر رہنا چاہیے۔ قوم صرف مٹی، پانی، کنکڑ پتھر سے نہیں بنتی، بلکہ قوم کا مطلب ہوتا ہے لوگ۔ بحران کتنا بھی بڑا کیوں نہ ہو، ملک کے باشندگان کا خود اعتماد کبھی ختم نہیں ہوا۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 16 Jan 2021, 11:34 AM
next