گرودوارہ رکاب گنج صاحب میں مبینہ فنڈ کے غلط استعمال پر ہنگامہ

سرسا نے کہا کہ ڈی ایس جی ایم سی ممبران کا ایک وفد سری اکال تخت صاحب کے جتھیدار سے ملاقات کرے گا اور سرنا برادران کو پنتھ سے نکالنے کا مطالبہ کرے گا۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

دہلی کے گرودوارہ رکاب گنج صاحب میں واقع دہلی سکھ گرودوارہ پربندھک کمیٹی (ڈی ایس جی ایم سی) کے دفتر میں ہفتہ کو اس وقت ہنگامہ برپا ہو گیا جب ڈی ایس جی ایم سی کے کچھ ممبران پولس کے ساتھ کمیٹی کے کھاتوں کی جانچ کرنے پہنچے۔

نارتھ ایونیو پولیس کے ساتھ گوردوارہ کمیٹی کے دفتر پہنچے شرومنی اکالی دل دہلی (ایس اے ڈی) کے جنرل سکریٹری اور پنجابی باغ وارڈ سے ڈی ایس جی ایم سی ممبر ہرویندر سنگھ سرنا نے کہا کہ انہیں پچھلے کچھ دنوں سے یہ اطلاعات مل رہی ہیں کہ گوردواروں کے فنڈز کا غلط استعمال کیا جا رہا ہے۔ لہذا، ان کی ٹیم کی شکایت پر، پولیس آج گرودوارہ کے احاطے میں ڈی ایس جی ایم سی کے کھاتوں کی جانچ کرنے گئی۔


سرنا نے کہا ’’جب ہم یہاں پہنچے، تو ہم اکاؤنٹس ڈپارٹمنٹ گئے اور کیش رجسٹر مانگا، جس میں موجودہ ایس اے ڈی کے پاس ایک کروڑ 30 لاکھ روپے ہونے کی تصدیق کی گئی تھی۔ لیکن جب جانچ کی گئی تو 66 لاکھ روپے کی نقدی کی پائی گئی۔ اس دوران عملے نے یہ بہانہ بنایا کہ بقایا رقم بینک میں جمع کرانے کے لیے لے جائی جا رہی ہے، جب کہ آج بینک بند تھے۔ باقی رقم کے بارے میں شام تک کوئی کچھ نہیں بتا سکا۔ پولیس نے یقین دہانی کرائی ہے کہ اس معاملے میں مناسب کارروائی کی جائے گی۔‘‘

اس معاملے میں ڈی ایس جی ایم سی کے سابق صدر منجیت سنگھ جی کے نے کہا کہ وہ کافی عرصے سے کہہ رہے ہیں کہ ڈی ایس جی ایم سی کے فنڈز کا غلط استعمال ہو رہا ہے۔ یہ سراسر چوری ہے۔ کروڑوں روپے کا فراڈ ہوا ہے۔ اس معاملے میں نئی ​​دہلی ضلع کے ڈپٹی کمشنر آف پولیس دیپک یادو نے کہا کہ اس سلسلے میں ان کے پاس شکایت آئی ہے اور جانچ کی جا رہی ہے۔


ڈی ایس جی ایم سی کے صدر منجندر سنگھ سرسا اور جنرل سکریٹری ہرمیت سنگھ کالکا نے اس معاملے پر ردعمل ظاہر کیا ہے۔ دونوں سکھ رہنماؤں نے ہفتہ کو ایک مشترکہ بیان میں کہا ’’ہرویندر سنگھ سرنا، پرمجیت سنگھ سرنا اور ان کے نئے بنائے گئے دوست منجیت سنگھ جی کے نے آج 1984 کی سیاہ تاریخ کو دہرایا ہے۔ اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس کی قیادت میں پولیس ٹیم کے ساتھ سرنا برادر آج گرو دوارہ میں داخل ہوئے اور کمیٹی کے دفتر میں زبردستی قبضہ کرنے کی کوشش کی۔ یہ دوسرا موقع ہے جب سرنا برادران نے اس طرح کمیٹی کے دفتر پر قبضہ کرنے کی کوشش کی ہے۔ اس سے پہلے بھی سنگتوں نے سرنا برادران کی کوششوں کو ناکام بنایا تھا۔ دونوں لیڈروں نے کہا کہ ڈی ایس جی ایم سی ممبران کا ایک وفد سری اکال تخت صاحب کے جتھیدار سے ملاقات کرے گا اور سرنا برادران کو پنتھ سے نکالنے کا مطالبہ کرے گا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔