عمرہ ویزوں کو معطل کرنا عارضی پیشگی اقدام ہے: سعودی عرب

سعودی عرب میں حج و عمرہ کے نائب وزیر عبد الفتاح مشط کا کہنا ہے کہ مملکت کی جانب سے عمرے کے ویزوں کو معطل کرنے کا فیصلہ عارضی پیشگی اقدام ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

سعودی عرب میں حج و عمرہ کے نائب وزیر عبد الفتاح مشط کا کہنا ہے کہ مملکت کی جانب سے عمرے کے ویزوں کو معطل کرنے کا فیصلہ عارضی پیشگی اقدام ہے۔ جمعرات کے روز العربیہ کے ساتھ گفتگو میں انہوں نے مزید بتایا کہ وزارت حج و عمرہ نے تمام کمپنیوں کو باور کرایا ہے کہ وہ معتمرین کے امور کا جائزہ لیں اور انہیں تمام تر سہولیات پیش کریں۔

مشاط کے مطابق معتمرین کے تحفظ کے لیے تمام تر ہدایات پر عمل درامد کے سلسلے میں وزارت صحت کے ساتھ تعاون جاری ہے۔

سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے بدھ کے روز عمرے اور مسجد نبوی کی زیارت کے مقصد سے مملکت میں داخل ہونے پر عارضی پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اسی طرح مملکت نے کرونا وائس سے متاثرہ ممالک سے آنے والوں کے لیے سیاحتی ویزوں کے اجرا کو بھی معطل کر دیا ہے۔

وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ سعودی شہریوں اور خلیج تعاون کونسل میں شامل ریاستوں کے شہریوں کے مملکت میں سفر کو معطل کر دیا گیا ہے۔

تاہم بیرون ملک سعودی شہری اس پابندی سے مستثنی ہیں، وہ مملکت واپس آ سکتے ہیں۔ قومی شناخی کارڈ رکھنے والے افراد اور خلیج تعاون کونسل کے باشندے سعودی عرب سے باہر اپنے ملکوں کا سفر کرسکتے ہیں۔سعودی عرب کے مطابق یہ تمام اقدامات عارضی ہیں اور متعلقہ اداروں کی جانب سے صورت حال کا مسلسل جائزہ لیا جا رہا ہے۔