کرناٹک میں موجودہ صورت حال برقرار رکھیں: سپریم کورٹ، عدالت کے حکم پر عمل کرینگے: اسپیکر

سپریم کورٹ نے کرناٹک میں 10 ایم ایل ایز کے استعفی کے معاملے میں منگل کو اگلی سماعت ہونے تک صورت حال جوں کی توں برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔

تصویر اے آئی این ایس
تصویر اے آئی این ایس

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے کرناٹک میں 10 ارکان اسمبلی کے استعفی کے معاملے میں منگل کو اگلی سماعت ہونے تک موجودہ صورت حال کو برقرار رکھنے کا حکم سنایا ہے۔ چیف جسٹس رنجن گگوئی کی زیر صدارت بنچ نے جمعہ کو کہا کہ اس معاملے میں کچھ اہم مسائل درپیش ہیں، جن پر منگل کو اگلی سماعت کے دوران فیصلہ سنایا جائے گا۔ عدالت عظمیٰ نے کہا کہ اگلی سماعت تک اس معاملے کی صورت حال جوں کی توں برقرار رکھا جائے۔

سپریم کورٹ کے فیصلہ پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کرناٹک اسمبلی کے صدر کے آر رمیش کمار نے کہا کہ عدلیہ کا وہ مکمل احترام کرتے ہیں اور عدالت عظمیٰ کے حکم کو نہ ماننے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔

رمیش کمار نے صحافیوں سے کہا، ’’اگر عدالت کا حکم کچھ اراکین اسمبلی کے استعفیٰ کے بارے میں ہے تو اس پر عمل درآمد کیا جانا ہے اور اگرکوئی غلط فہمی ہوتی ہے تو ہم عدالت سے واضح کرنے اور رہنمائی کرنے کی درخواست کر سکتے ہیں۔ عدلیہ اعلیٰ ترین ہے لہٰذا کسی بھی تنازعہ کو کھڑا کرنے کی ضرورت نہیں ہے اور نہ ہی مفادات کا کوئی ٹکراؤ ہے۔‘‘

اسپیکر نے جمعرات کو کہا تھا کہ موجودہ سیاسی صورتحال میں مجھے معلوم کرنا ہے کہ کیا وہ استعفیٰ اپنی مرضی سے دے رہے ہیں اور مجھے آئین کی دفعہ 190 اور پروسیزر پر عمل درآمد کروانا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کرناٹک میں سیاسی بحران سے ان کا کوئی تعلق نہیں ہے لیکن غیر مطمئن اراکین اسمبلی کے استعفیٰ کو قبول کرنے یا رد کرنے کے لیے ضابطوں پر عمل درآمد کروانا ہوگا۔

واضح رہے کہ کرناٹک میں حکمراں کانگریس-جنتا دل (ایس) اتحاد کے 10 ارکان اسمبلی نے چند روز قبل اپنی رکنیت سے استعفے دے دئے تھے لیکن اسپیکر نے ان پر فوری طور پر کوئی فیصلہ نہیں کیا تھا۔ استعفے دینے کے بعد یہ ارکان اسمبلی ممبئی چلے گئے تھے۔

ان تمام قانون سازوں نے سپریم کورٹ میں ایک درخواست دائر کر کے کہا تھا اسمبلی کے اسپیکر جان بوجھ کر استعفی قبول نہیں کر رہے ہیں۔ جمعرات کو ان کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے، عدالت نے انہیں 6 بجے تک اسمبلی کے اسپیکر کے سامنے حاضر ہونے کے لئے کہا تھا۔

اس کے ساتھ ہی عدالت عظمیٰ نے یہ بھی ہدایت دی تھی کہ اسمبلی کے اسپیکر اس معاملے میں جمعہ کو سماعت کے دوران پیش رفت سے مطلع کریں۔ باغی اراکین اسمبلی جمعرات کو عدالت کی ہدایت کے مطابق اسپیکر کے سامنے پیش ہوئے تھے اور انہوں نے پھر سے اپنے استعفی اسپیکر کو سونپے تھے۔

Published: 12 Jul 2019, 6:10 PM