لکھیم پور کھیری تشدد پر سپریم کورٹ نے از خود نوٹس لیا، آج سماعت

سپریم کورٹ کی ویب سائٹ کے مطابق چیف جسٹس این وی رمن ، جسٹس سوریہ کانت اور جسٹس ہیما کوہلی پر مشتمل ڈویژن بینچ آج لکھیم پور کھیری معاملے کی سماعت کرے گی۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

سپریم کورٹ نے اتر پردیش میں لکھیم پور کھیری تشدد معاملے کا از خود نوٹس لیا ہے اوروہ آج اس کی سماعت کرے گی۔

سپریم کورٹ کی ویب سائٹ کے مطابق چیف جسٹس این وی رمن ، جسٹس سوریہ کانت اور جسٹس ہیما کوہلی پر مشتمل ڈویژن بنچ آج لکھیم پور کھیری معاملے کی سماعت کرے گی۔


واضح رہے کہ اترپردیش کے نائب وزیر اعلیٰ کیشوا پرساد موریہ کا لکھیم پور کھیری کا پروگرام تھا کہ اسی دوران چار کسانوں کی کار سے کچلنے سے موت ہوگئی تھی۔ الزام ہے کہ مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا ٹینی کے بیٹے آشیش مشرا کی گاڑی سے کچلنے کی وجہ سے مظاہرہ کررہے کسانوں کی موت ہوگئی ۔ اس کے بعد اور مجموعی طور پر کم از کم آٹھ افراد ہلاک ہوئے۔

اتر پردیش پولیس نے اس معاملے میں مسٹر اجے مشرا کے بیٹے آشیش مشرا سمیت کئی لوگوں کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے۔ ادھر حزب اختلاف اس معاملہ پر مرکزی اور ریاستی حکومت سے جواب طلب کر رہا ہے اور مرکزی وزیر مملکت کے استعفے کا مطالبہ کر رہا ہے۔


کانگریس کی جنرل سیکریٹری پرینکا گاندھی پہلی قائد تھیں جنہوں نے لکھیم پور کھیری میں متاثرین سے ملنے کی کوشش کی تھی لیکن ان کو راستہ میں روک کر حراست میں لے لیا تھا ۔ اس کے خلاف پرینکا گاندھی نے گیسٹ ہاؤس میں ہی ستیہ گرہ شروع کر دی تھی۔ کل کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کانگریس کے دو وزراء کے ہمراہ لکھیم پور کھیری جانے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد اتر پردیش حکومت نے ان کو اور پرینکا کو لکھیم پور کھیری جانے کی اجازت دے دی تھی ۔ انہوں نے متاثرین سے مل کر ان کو گلے لگایا ۔ اس سارے معاملہ میں ایک صحافی کی بھی موت ہو گئی تھی اس کے گھر والوں سے بھی کانگریس رہنماؤں نے ملاقات کی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 07 Oct 2021, 7:40 AM