حکومت کا موقف سننے کے بعد سیاسی پارٹیوں کو بھی سنے الیکشن کمیشن:ایس پی

بی جےپی شکست کے خوف سے الیکشن کو موخر کرانے کے لئے کوشاں ہے۔کورونا کا بہانہ بنا کر حکومت اپوزیشن پارٹیوں کو ہراساں کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

اترپردیش اسمبلی انتخابات کا جائزہ لینے اگلے ہفتے ریاست کے دورے پر آرہے الیکشن کمیشن سے سماج وادی پارٹی پارٹی نے مطالبہ کیا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر کی قیادت والے اعلی سطح نمائندہ وفد کو حکومت کا موقف سننے کے بعد اس ضمن میں سبھی سیاسی پارٹیوں کی بھی بات سننی چاہئے۔

ایس پی کے قومی جنرل سکریٹری و سابق رکن پارلیمان رما شنکر راج بھر نے ہفتہ کو یہاں کہا کہ انتخابات کے سلسلے میں حکومت کا موقف سننے کے بعد الیکشن کمیشن کو سیاسی پارٹیوں کا بھی موقف سننا چاہئے۔ قابل ذکر ہے کہ چیف الیکشن کمیشن سشیل چندرا کی قیادت میں الیکشن کمیشن کی ایک ٹیم اترپردیش میں انتخابی تیاریوں کا جائزہ لینے کے لئے 28تا 30دسمبر تک ریاست کا دورہ کرے گی۔ اس دوران کورونا کے بڑھتے انفکشن کے پیش نظر انتخابات کو موخر کرنے کے الہ آباد ہوئی کورٹ کی اپیل کو پیش نظر رکھتے ہوئے الیکشن کمیشن اس پہلو کا بھی جانچ کرے گی۔


راج بھر نے کہا کہ بی جےپی شکست کے خوف سے الیکشن کو موخر کرانے کے لئے کوشاں ہے۔کورونا کا بہانہ بنا کر حکومت اپوزیشن پارٹیوں کی ہراسانی جاری رکھنے کا منشی بنارہی ہے۔ ملحوظ رہے کہ دو دن قبل الہ آباد ہائی کورٹ نے کورونا کے بڑھتے خطرے کے پیش نظر الیکشن کمیشن سے انتخابات کو موخر کرنے کی اپیل کی تھی۔

راج بھر نے کہا کہ عدالت کو اس معاملے میں کوئی بھی تبصرہ کرنے سے بچنا چاہئے کیونکہ ایسا کرنے سے حکمراں جماعت کو انتخابات کو موخر کرنے کا موقع ملتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔