اقتدار کی بھوکی اور لالچی بی جے پی کو اقتدار سےبے دخل کرنے کی ضرورت ،ابوعاصم اعظمی

عاصم نے کہا کہ کسان زرعی قانون کو لے کر سڑکوں پر ہیں اور بی جے پی حیدرآباد کے معمولی سے میونسپلٹی کے گلی کے انتخاب میں مشغول ہے ،یہی ا س کا اصل چہرہ ہے۔

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

مہاراشٹر سماجوادی پارٹی لیڈر اور رکن اسمبلی ابوعاصم اعظمی نے وزیر داخلہ اور بی جے پی لیڈر کوآئینہ دکھاتےہوئے کہا ہےکہ آپ نظام کلچرل تہذیب کے خاتمہ کا دعوی کر رہے ہیں جب چین کے ساتھ جنگ ہوئی تو اسی نظام شاہی نے ملک کے تحفظ کے لئے لال بہادر شاستری کو پانچ ہزار کلوسونا عطا کیا تھا کیونکہ اس وقت ملک کی معشیت کمزور تھی ۔

انہوں نے کہا کہ اسی نظام شاہی کلچر نے گئوکشی پر پابندی عائد کی اور ملک میں عثمانیہ یونیورسٹی کی داغ بیل ڈالی ۔اسی نظام نے مذہبی تنظیموں کو فنڈ فراہم کئے جن میں مندر بھی شامل تھےلیکن آج بی جے پی کے اقتدار میں کسان خودکشی کر رہے ہیں ملک کی معیشت تباہ ہو رہی ہے اور چین کی سرحد میں دراندازی بھی ہو گئی ہے اس لئے اب لوگ چاہتے ہیں کہ بی جے پی کی سرکار تبدیل ہو جائےاور اس ملک کو برباد کرنے والی سرکار کو ہٹا کر ایک اچھی سرکارلائی جائے ۔

ابو عاصم نے کہا کہ بی جے پی نے ملک کو نفرت کی سیاست کے علاوہ کچھ نہیں دیا ہے اور یہی وجہ ہے کہ آج ملک کی معیشت تباہ ہو گئی۔ انہوں نے کہاکہ کورونا وائرس کے دوران فرقہ پرستی میں بی جے پی نے اضافہ کیا ہے اور ملک کے عوام طبی ضروریات کے لئے پریشان ہیں ۔ عاصم نے کہا کہ کسان زرعی قانون کو لے کر سڑک پر ہیں تو وہیں بی جے پی معمولی سے حیدرآباد کے میونسپلٹی کے گلی کے انتخاب میں مشغول ہے اور یہی ا س کا اصل چہرہ ہے۔ اسے عوام سے کوئی ہمدرد ی نہیں ہے یہ صر ف اقتدار کی بھوکی اور لالچی پارٹی ہے اس لئے بی جے پی کو اقتدار سے بے دخل کیاجائے ۔ ابوعاصم اعظمی نے مرکزی وزیر داخلہ کو تاریخ کے مطالعہ کی بھی نصیحت کی ہے ۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next