قومی راجدھانی دہلی میں ہوا کے معیار میں معمولی بہتری

سسٹم آف ایئر کوالٹی، ویدر فورکاسٹنگ اینڈ ریسرچ (ایس اے ایف اے آر) کے مطابق ہوا کے معیار کا انڈیکس آج ’انتہائی خراب‘ کیٹیگری میں ریکارڈ کیا گیا ہے اور اگلے دو دنوں میں اس میں بہتری آنے کا امکان ہے۔

فضائی آلودگی، تصویر آئی اے این ایس
فضائی آلودگی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: قومی راجدھانی دہلی میں گزشتہ کچھ دنوں سے ایک بڑا مسئلہ بنی فضائی آلودگی میں پیر کی صبح معمولی بہتری آئی لیکن ہوا کا معیار ’انتہائی خراب‘ زمرے میں رہا۔ اس دوران پورے شہر کا ایئر کوالٹی انڈیکس (اے کیو آئی) 318 ریکارڈ کیا گیا جبکہ اتوار کی صبح یہ 386 ریکارڈ کیا گیا۔

سسٹم آف ایئر کوالٹی، ویدر فورکاسٹنگ اینڈ ریسرچ (ایس اے ایف اے آر) کے مطابق ہوا کے معیار کا انڈیکس آج ’انتہائی خراب‘ کیٹیگری میں ریکارڈ کیا گیا ہے اور اگلے دو دنوں میں اس میں بہتری آنے کا امکان ہے کیونکہ ٹرانسپورٹ کی سطح پر ہوائیں آہستہ چل رہی ہیں، نتیجتاً، پرالی جلانے سے آلودگی دہلی میں کم پھیلتی ہے۔


ایجنسی نے کہا کہ ہواؤں کے سست بہاؤ کی وجہ سے آلودگی کا پھیلاؤ کم ہو رہا ہے۔ اس کے نتیجے میں ہوا کا معیار ’انتہائی خراب‘ زمرے میں رہا۔ کل تقریباً 3445 کھیتوں میں پرالی کو جلایا گیا، جو دہلی کے پی ایم 2.5 میں 12 فیصد کا حصہ ڈالتا ہے۔ ’سفر‘ نے اطلاع دی ہے کہ آج صبح 6 بجے، 10 اور 2.5 مائیکرون کے قطر والے پارٹیکیولیٹ میٹر ( پی ایم) کا ارتکاز بالترتیب 267 اور 143 تھا، دونوں 'انتہائی ناقص' اور ’ ناقص ترین' زمرے میں آتے ہیں۔

مرکزی آلودگی کنٹرول بورڈ (سی پی سی بی) کے اعداد و شمار کے مطابق آنند وہار میں 382، بوانا میں 381، چاندنی چوک میں 335، دوارکا سیکٹر 8 میں 352، دلشاد گارڈن (آئی ایچ بی اے ایس ) میں 315 اور پنجابی باغ میں 373 ہوا کے معیار کا انڈیکس ریکارڈ کیا گیا۔ یہ سبھی’انتہائی بدترین ‘ زمرے میں ہیں۔ ان کے علاوہ نجف گڑھ، آر کے پورم اور پوسا میں ہوا کے معیار کا انڈیکس بالترتیب 291، 292 اور 298 ریکارڈ کیا گیا جو ’ناقص‘غریب' زمرے میں آتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔