شیوشینا کو نائب وزیر اعلی اور 13 وزرا کے قلمدان کی پیشکش

ریاست مہاراشٹر میں شیوشینا اور بی جے پی کے درمیان حکومت سازی کے لئے جاری رسہ کشی ایک طرح سے ختم ہوتی دکھلائی پڑ رہی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ممبئی: ریاست مہاراشٹر میں شیوشینا اور بی جے پی کے درمیان حکومت سازی کے لئے جاری رسہ کشی ایک طرح سے ختم ہوتی دکھلائی پڑ رہی ہے ۔ نیز ذرائع کا کہنا ہے کہ بی جے پی رہنماؤں سینا لیڈران کو یہ پیشکش کی ہے کے انکی اتحادی پارٹی ہونے کے ناطے شیوشینا کو دیویدر فڈنویس کی قیادت میں بننے والی حکومت میں نائب وزیر اعلی کا عہدہ سمیت 13 وزرا کے قلمدان دئے جائیں گے۔

اس طرح سے بی جے پی اور شیوسینا کے درمیان ہوئے اقتدار میں ففٹی ففٹی کے حصہ داری والا فارمولا ختم ہوتا دکھلائی پڑ رہا ہے اور خود شیوسینا ترجمان سنجے راوت نے یو ٹرن لیتے ہوئے اس بات کا اعلان کیا کہ اقتدار میں کتنا حصہ حاصل ہو یہ اہم نہیں ہے بلکہ حکومت سازی میں شیوسینا کی شمولیت ریاست کی ترقی کیلئے ضروری ہے نیز ریاست کی ترقی کو وہ اولیت دیتے ہیں نہ کہ وزر ا ٔ کی تعداد اور قلمدان پر ۔

ذرائع کے مطابق آج رات دیر گئے سینا لیڈران کی سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے کی قیادت میں ایک میٹنگ ہوئی جس میں بی جے پی کی اس پیشکش پر غورو خوض کیا جا رہا ہے ۔ذرائع نے یہ بھی کہا کہ بی جے پی وزیر اعلی ، محکمہ داخلہ ، مالیات ، شہری ترقیات ، محصول جیسے اہم قلمدان اپنے پاس رکھے گی بقیہ قلمدان دیئے جانے کی بی جے پی نے شیوسینا کو پیشکش کی ہے ۔

کل صبح جمعرات تک یہ واضح ہو جائے گا کہ آیا بی جے پی کی اس پیشکش کو شیوسینا نےمنظور کیا یا نہیں ۔اسی درمیان کانگریس سمیت راشٹروادی کانگریس پارٹی نے بھی دوبارہ شیوسینا کو یہ پیشکش کی ہے کہ اگر وہ حکومت سازی کا دعوی کرتی ہے تو دونوں پارٹیاں اکثریت ثابت کرنے کیلئے شیوسینا کا ساتھ دینے کیلئے تیار ہیں ۔

next