شرمیلا نے جگن کو آڑے ہاتھوں لیا، کہا آندھرا کو خصوصی درجہ دلانے میں رہے ناکام

عوام کو یہ بھروسہ تھا کہ جگن کے وزیراعلی بننے پر ریاست کو خصوصی درجہ حاصل ہوگاتاہم اس بھروسہ سے ووٹ دینے کے باوجود ریاست کو یہ درجہ نہیں ملا۔

<div class="paragraphs"><p>فائل تصویر آئی اے این ایس</p></div>

فائل تصویر آئی اے این ایس

user

یو این آئی

کانگریس صدرآندھراپردیش وائی ایس شرمیلا نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلی جگن موہن ریڈی کے دور حکومت میں کسانوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ چتور ضلع کے نگری میں روڈ شو سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے برہمی کا اظہار کیا کہ ریاست کی تشکیل کے 10 سال ہونے کے باوجود کوئی ترقی نہیں ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی نے انتخابات میں عوام سے کئے گئے ہر وعدہ کو فراموش کردیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسے آمرحکمران کے دوبارہ اقتدار میں آنے سے ریاست میں جمہوریت نہیں بچ پائے گی۔انہوں نے الزام لگایا کہ آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کادرجہ دلانے اورپولاورم پراجکٹ کو مکمل کرنے میں وزیراعلی ناکام رہے۔عوام کو یہ بھروسہ تھا کہ جگن کے وزیراعلی بننے پر ریاست کو خصوصی درجہ حاصل ہوگاتاہم اس بھروسہ سے ووٹ دینے کے باوجود ریاست کو یہ درجہ نہیں ملا۔


شرمیلا نے کہاکہ ریاست میں زراعت کی حالت کافی ابتر ہے۔فصل کونقصان پر معاوضہ بھی نہیں دیاجارہا ہے۔انہوں نے پوچھا کہ ریاست میں کوئی بھی ایسا کسان ہے جس پر قرض کا بوجھ نہیں ہے؟جگن نے کئی باتیں کیں اور کئی وعدے کئے، انتخابات ہونے کے بعد یہ تمام وعدے فراموش کردیئے گئے۔ریاست کے طلبہ کیلئے فیس کی بازادائیگی نہیں ہورہی ہے۔ریاست میں 30ہزار ملازمتیں مخلوعہ ہیں۔میگاڈی ایس کروانے کا اعلان کرنے والی حکومت 6ہزار ملازمتوں کو پُرکرنے کے لئےڈی ایس سی کی بات کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ جگن نے اپنے انتخابی منشور میں وعدہ کیاتھا کہ ریاست میں برسراقتدارآنے کے بعد جلایگنم پروگرام کے ذریعہ ریاست کے تمام آبپاشی پراجکٹس کو پوراکیاجائے گا۔انہوں نے پوچھا کہ کیا ایک بھی پراجکٹ مکمل کیاگیا؟

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;