شاہجہاں پور عصمت دری: متاثرہ رنگداری کے الزام میں گرفتار، 14 دن کی عدالتی حراست میں

چنمیانند پر عصمت دری کا الزام عائد کرنے والی لاء طالبہ کو ایس آئی ٹی نے گرفتار کر کے مقامی عدالت میں پیش کیا۔ بعد ازاں عدالت نے رنگداری وصولی کے الزام میں طالبہ کو 14 دن کی عدالتی حراست میں بھیج دیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

شاہجہاں پور کیس میں سابق مرکزی وزیر اور بی جے پی لیڈر سوامی چنمیانند پر جنسی استحصال کا الزام عائد کرنے والی لاء کی طالبہ کو رنگداری کے معاملے میں مقامی عدالت نے 14 دن کی عدالتی حراست میں بھیج دیا ہے۔ اس سے قبل مبینہ طور پر عصمت دری کی شکار طالبہ کو ایس آئی ٹی نے بدھ کی صبح تقریباً 8 بجے شاہجہاں پور سے گرفتار کیا تھا۔ طالبہ کے والد نے اس گرفتاری کی خبر میڈیا کو دی۔ گرفتاری کے بعد ایس آئی ٹی نے طالبہ کا میڈیکل چیک اَپ کرایا اور پھر عدالت میں پیش کیا۔

قابل ذکر ہے کہ چنمیانند پر عصمت دری کا الزام عائد کرنے والی طالبہ منگل کو ہائی کورٹ سے لوٹ کر اے ڈی جی عدالت میں ایس آئی ٹی کے ذریعہ کی گئی اب تک کی جانچ رپورٹ طلب کی اور پیشگی ضمانت کی عرضی بھی داخل کی تھی۔ طالبہ کی عرضی پر عدالت 26 ستمبر کو سماعت کے لیے تیار ہو گیا تھا اور اس بات کی جانکاری طالبہ کے وکیل انوپ تریویدی نے منگل کو ہی میڈیا کو دی تھی۔ لیکن ضمانت عرضی پر سماعت سے پہلے ہی طالبہ کو گرفتار کر لیا گیا۔

غور طلب ہے کہ طالبہ پر چنمیانند سے رنگداری طلب کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں ایک ویڈیو سامنے آیا تھا جس کے بعد طالبہ اور اس کے تین ساتھیوں پر پولس نے رنگداری مانگنے کا کیس درج کیا تھا۔ چنمیانند نے پولس میں اس معاملے پر کیس درج کروایا تھا۔ طالبہ اور اس کے جاننے والوں پر چنمیانند سے 5 کروڑ کی رنگداری مانگنے کا الزام ہے۔ اس سلسلے میں پولس نے سچن عرف سونو اور وکرم سنگھ کو گرفتار کیا تھا۔ ایس آئی ٹی نے اس تعلق سے منگل کو دونوں ملزمین کو ریمانڈ پر لے کر پوچھ تاچھ کی تھی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next