علی گڑھ: مندر کے پجاری سمیت 3 افراد کا قتل، علاقہ میں سنسنی

مندر کے پجاری کو گولی مار کر قتل کرنے کے بعد کھیت پر موجود شوہر و بیوی کو چاقیوں سے گود قتل کیا گیا، لوگوں کا بڑھتے جرائم کو لیکر کیا ہنگامہ، پولس و انتظامیہ کے اعلیٰ افسران نے جائزہ لیا۔

علی گڑھ: اتر پردیش میں بڑھتے جرائم کی وارداتوں سے یہ بات صاف ہو گئی ہے کہ صوبہ مین جنگل راج قائم ہے اور لوگ دہشت کے سائے میں زندگی گزارنے کو مجبور ہیں۔

علی گڑھ ضلع میں گزشتہ تین روز کی مدت میں آدھا درجن سے زائد افراد کی موت سے خوف و دہشت کا ماحول قائم ہے گزشتہ روز دیر شب بھی تھانہ علاقہ ہردواگنج کے تحت واقع گائوں سفیداپور کے نزدیک کلائی راجواہا کے کنارے بنے ایک آشرم نما مندر کے پجاری کو نامعلوم افراد نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ کچھ دیر بعد تھوری ہی دوری پر واقع کھیت کی رکھوالی کر رہے یوگیندر سنگھ ساکن سفیداپور و اس کی اہیہ وملیش کو بھی چاقیوں سے گودکر قتل کر دیا گیا۔

تینوں کے قتل کئے جانے کی اطلاع علاقائی لوگوں کو صبح جب ہوئی تو عالقہ میں دیکھتے ہی دیکھتے ہنگامہ ہو گیا گائوں کے لوگ جو جہاں تھا وہاں سے بھاگ کر جائے واردات کی جانب آتے گئے اسی درمیان کسی طرح علاقہ پولس کو بھی اطلاع مل گئی پولس نے موقع سے تمام ثبوت جمع کرنے کے بعد تینوں لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا۔

علاقائی لوگوں نے ایک ہی علاقہ میں تین تین قتل کی وارداتوں پیش آنے سے پولس و ضلع انتظامیہ کے خلاف اپنی ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے اتر پردیش حکومت کے خلاف نعرے کی۔ مظاہرین نے جلد از جلد قاتلوں کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ جائے وقوع کا معائنہ کرنے آئے ایس ایس پی و ضلع انتظامیہ کے سامنے بھی علاقائی لوگوں نے انی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یوگی حکومت ہر طرح سے ناکام ہو چکی ہے اور مجرم و قاتلوں کے حوصلے پولس کی لا رواہی کے سبب بلند ہی۔ واردات کی رپورٹ نامعلوم افراد کے خلاف درج کرائی گئی ہے۔

ایس پی دیہات نے بتایا کہ قتل کی واردات کی جانچ نہایت سنجیدگی سے کی جا رہی ہے اسکے لئے جانچ ٹیم کی تشکیل کی جا چکی ہے جلد ہی قاتلوں کو گرفتار کر لیا جائے گا۔

علاقائی لوگوں کا کہنا ہے کہ مندر کے پجاری بابا روپ داس گذشتہ 15 برس سے اسی آشرم میں رہکر سادھنا کرتے تھے ان کی کسی سے کسی طرح کی دشمنی بھی نہیں تھی۔ پولس زمینی سطح پر تمام پہلئوں سے جانچ کر رہی ہے۔ خبر لکھے جانے تک پولس نے سبھی کا پوسٹ مارٹم کرانے کے بعد لاشوں کو اہل خانہ کے سپر د کر دیا تھا۔

سب سے زیادہ مقبول