سابق وزیرِ مالیات ارون جیٹلی کی زندگی کا سفر ختم، ایمس میں لی آخری سانس

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر مالیات ارون جیٹلی گزشتہ کئی دنوں سے ایمس میں داخل تھے اور 24 اگست کو 12 بج کر 7 منٹ پر وہ زندگی اور موت کی جنگ ہار گئے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر مالیات ارون جیٹلی گزشتہ 9 اگست سے ایمس میں داخل تھے، لیکن آج (24 اگست) دوپہر 12 بج کر 7 منٹ پر وہ زندگی اور موت کی جنگ ہار گئے۔ ارون جیٹلی کی زندگی کا سفر 66 سال کا رہا اور جیسے ہی ان کی موت کی خبر میڈیا میں آئی، تعزیتی پیغامات کا ایک سلسلہ شروع ہو گیا۔ قابل ذکر ہے کہ کڈنی ٹرانسپلانٹ کر چکے ارون جیٹلی کینسر میں مبتلا ہو گئے تھے اور ان کا علاج کافی دنوں سے چل رہا تھا۔ گزشتہ دنوں ان کی طبیعت زیادہ خراب ہو گئی تھی جس کے بعد دہلی واقع ایمس میں انھیں داخل کرایا گیا تھا۔

سابق وزیر مالیات ارون جیٹلی کی صحت پچھلے کچھ مہینوں میں کافی خراب ہو گئی تھی اور طبیعت کی ناسازی کی وجہ سے ہی انھوں نے لوک سبھا انتخاب نہ لڑنے کا فیصلہ کیا تھا۔ موجودہ مرکزی کابینہ میں نہ شامل ہونے کا فیصلہ بھی ارون جیٹلی نے اپنی خرابیٔ طبیعت کی وجہ سے ہی کیا تھا۔ 14 مئی کو ایمس میں جب جیٹلی کا کڈنی ٹرانسپلانٹ ہوا تھا، اس وقت سے ان کی طبیعت کچھ زیادہ ہی خراب رہنے لگی تھی۔

سابق وزیرِ مالیات ارون جیٹلی کی زندگی کا سفر ختم، ایمس میں لی آخری سانس

ہندوستانی سیاست کی اونچائیوں کو چھونے والے ارون جیٹلی کی پیدائش 28 دسمبر 1952 کو نئی دہلی میں ہی ہوئی تھی۔ جیٹلی کی فیملی میں وکلاء کی اچھی خاصی تعداد تھی اس لیے انھیں بھی وکالت میں کافی دلچسپی تھی۔ ان کے والد کا نام کشن جیٹلی اور والدہ کا نام رتن پربھا جیٹلی ہے۔ جیٹلی نے دہلی کے رام کالج آف کامرس سے گریجویشن کی تعلیم حاصل کی۔ اس کے علاوہ دہلی یونیورسٹی سے انھوں نے لاء میں گریجویشن کیا ہے۔ وہ دہلی یونیورسٹی کے اسٹوڈنٹس یونین کے صدر بھی رہ چکے ہیں۔

جیٹلی کے سیاسی کیریر کی شروعات زمانۂ طالب علمی سے ہی شروع ہو گئی تھی۔ دہلی یونیورسٹی میں اے بی وی پی کے طلبا لیڈر کی شکل میں جیٹلی نے طلبا یونین انتخاب میں سرگرمی کے ساتھ حصہ لیا تھا اور پھر 1974 میں دہلی یونیورسٹی طلبا یونین کے صدر بھی بنے تھے۔ آئیے ایک سرسری نظر ڈالتے ہیں ان کے سیاسی سفر پر...

  • 1977 میں جَن سنگھ میں شامل ہوئے۔
  • 1977 میں ہی دہلی اے بی وی پی کے صدر اور اے بی وی پی کے آل انڈیا سکریٹری بنے۔
  • 1980 میں بی جے پی کے یوتھ مورچہ کے سربراہ بنے۔
  • 1991 میں بی جے پی کے قومی مجلس عاملہ کے رکن بنے۔
  • 1999 میں بی جے پی کے ترجمان بنے۔
  • 1999 کو اٹل بہاری واجپئی حکومت میں اطلاعات و نشریات کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج) بنے۔
  • 2000 میں وہ قانون، انصاف اور کمپنی معاملوں اور جہاز رانی کے مرکزی وزیر بنے۔
  • 2002 میں بی جے پی کے قومی سکریٹری بنے۔
  • 2003 میں قانون اور انصاف کے وزیر اور صنعت کے وزیر بنے۔
  • 2009 میں راجیہ سبھا میں اپوزیشن کے لیڈر منتخب ہوئے۔
  • 2014 میں پہلی بار امرتسر سے لوک سبھا انتخاب لڑا۔
  • 2014 میں ہی مودی حکومت کی کابینہ میں وزیر مالیات کی ذمہ داری سنبھالی۔ بعد میں وزیر دفاع کا اضافی چارج بھی انھوں نے سنبھالا تھا۔
  • 2019 میں 24 اگست کی دوپہر 12 بج کر 7 منٹ پر انھوں نے دہلی واقع ایمس میں آخری سانس لی۔
Published: 24 Aug 2019, 2:10 PM