کماری شیلجا نے وزیر تعلیم پر عائد کیا غریب بچوں کو اچھی تعلیم سے محروم کرنے کا الزام

کانگریس لیڈر کماری شیلجا نے کہا کہ پرائیویٹ اسکولوں میں غریب بچوں کو داخلہ نہ دینے کے بعد ریاست کی بی جے پی-جے جے پی حکومت کی پرائیویٹ اسکول آپریٹر کے ساتھ ملی بھگت کھل کر سامنے آئی ہے۔

کماری شیلجا، تصویر آئی اے این ایس
کماری شیلجا، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

چنڈی گڑھ: ہریانہ کانگریس کی صدر کماری سیلجا نے ریاستی وزیر تعلیم پر ریاست کے پرائیویٹ اسکولوں میں غریب خاندانوں کے بچوں کو اچھی تعلیم دینے سے انکار کرنے کا الزام لگایا ہے، عوامی معافی مانگنے اور عہدے سے استعفیٰ دینے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

آج یہاں جاری ایک بیان میں کماری شیلجا نے کہا کہ پرائیویٹ اسکولوں میں غریب بچوں کو داخلہ نہ دینے کی وجہ سے ریاست کی بی جے پی-جے جے پی حکومت کی پرائیویٹ اسکول آپریٹر کے ساتھ ملی بھگت بھی کھل کر سامنے آگئی ہے۔ اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت کو غریبوں سے کوئی سروکار نہیں۔


انہوں نے کہا کہ کانگریس ہریانہ ایجوکیشن رولز کی دفعہ 134-A کو ختم کرنے کی ہر کوشش کی مخالفت کرے گی، کیونکہ اس کے خاتمے سے غریب بچوں کی اچھی تعلیم کی امید ختم ہو جائے گی اور پرائیویٹ اسکول مافیا مزید منظم ہو جائے گا۔ اس دفعہ کے خاتمے سے دو لاکھ روپے سالانہ آمدنی والے غریب خاندانوں کے بچوں کو پرائیویٹ اسکولوں میں مفت تعلیم ختم ہو جائے گی۔

کماری سیلجا نے کہا کہ وزیر تعلیم کا یہ کہنا بالکل غلط ہے کہ غریب بچوں کو پرائیویٹ اسکولوں میں داخلہ نہیں دیا جاتا، وہ رول 134-A کو ختم کرنے کے لیے تبدیلیاں کر رہے ہیں تاکہ غریب گھرانوں کے بچوں کو مستقبل میں کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔