یوکرین کی فضائی دفاع کو ’بے وقوف‘ بنانے کے لیے خفیہ میزائلوں کا استعمال کر رہا روس!

امریکی انٹلیجنس کے مطابق یوکرینی اہداف پر حملہ کرنے کے لیے روس خفیہ ’ڈکوئے ڈارٹ‘ میزائلوں کا استعمال کر رہا ہے، جسے انھوں نے ویسٹ ریورس-انجینئرنگ کو روکنے کے لیے درآمد کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

امریکی انٹلیجنس نے دعویٰ کیا ہے کہ یوکرینی اہداف پر حملہ کرنے کے لیے روس خفیہ ’ڈکوئے ڈارٹ‘ میزائلوں کا استعمال کر رہا ہے، جسے انھوں نے ویسٹ ریورس-انجینئرنگ کو روکنے کے لیے درآمد کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ ’ڈیلی میل‘ کی رپورٹ میں اس کی جانکاری دی گئی ہے۔ مانا جاتا ہے کہ روس اور بیلاروس میں موبائل راکٹ لانچر یوکرین کی فضائی دفاع کو بے وقوف بنانے کے لیے ماسکو کی اسکندر-ایم میزائلوں کی شوٹنگ کر رہے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ڈارٹ کے سائز کے یہ اسلحے جنھیں بنیادی طور سے کلسٹر بم مانا جاتا تھا، سوشل میڈیا پر روسی حملے کے آغاز سے ہی دیکھے گئے ہیں۔ ڈیلی میل نے بتایا کہ اہم اہداف کو نشانہ بنانے کے لیے روسی فوج اسکندر میزائلوں کا استعمال کرتی ہے جن کی مارنے کی صلاحیت 500 کلومیٹر، تقریباً 300 میل تک ہوتی ہے اور زیادہ طاقتور ’وار ہیڈ‘ لے جاتے ہیں۔ یہ بڑی عمارتوں اور کچھ اہم سہولیات کو تباہ کر سکتے ہیں۔


نیویارک ٹائمز کے مطابق ایک امریکی خفیہ افسر نے دعویٰ کیا ہے کہ ڈارٹس اسکندر راکٹوں کو فضائی دفاع میزائلوں سے حفاظتی نظام کو بے وقوف بنانے کے لیے ہیٹ-سیکنگ اور رڈار تکنیک کا استعمال کر کے حفاظت کرتے ہیں۔ انھوں نے اسکندر میزائلوں کے ساتھ استعمال کیے گئے ڈارٹس اور کام کی تصویروں کی تصدیق کی۔ کچھ اسکندر میزائلوں کو مبینہ طور پر روسی معاون بیلاروس کے علاقے سے داغا گیا تھا، جس نے روسی حملے کے لیے ایک اسٹیج کی شکل میں کام کیا ہے۔

ان کم دوری کی بیلسٹک میزائلوں کا مقابلہ کرنا یوکرینی فضائی دفاع نظام کے لیے ایک مشکل کام ثابت ہوا ہے جو کہ کیف اور خرکیف میں شہریوں کو ہدف کرنے والے حملے کو روکنے کی کوشش کر رہا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔