8 ماہ بعد مہاراشٹر میں مساجد کھل گئیں ، دو رکعت نفل نماز شکرانہ اداکرنے کی درخواست

رضا اکیڈمی کے چیئرمین محمد سعید نوری نے کہا کہ مسلم امہ کو اپنے رب کی رحمت پر بھروسہ رکھنا چاہیے،وہ کبھی بھی اپنے بندوں کو مایوس نہیں کرتا۔

تصویر بشکریہ اے این آئی ٹویٹر 
تصویر بشکریہ اے این آئی ٹویٹر
user

یو این آئی

مہاراشٹر میں حکومت کےفیصلہ کے بعد کہ آج سے تمام مذہبی مقامات عبادت کےلئے کھول دئے جائیں گی لوگوں نے بڑی تعداد میں مندر اور مساجد میں عبادت کی۔ ادھر مسلم مذہبی رہنماؤں نے مساجد کھلنے پر مسلمان دو رکعت نفل نماز شکرانہ اداکرنےکی اپیل کی،آل انڈیا رضا اکیڈمی کے صدر سعیدنوری نے مسلمانوں سے یہ اپیل کی ہے اور انہوں نے حکومت مہاراشٹرکے اقدام لائق ستائش قرار دیا ہے ۔

رضا اکیڈمی کے ترجمان عارف رضوی نے ایک اعلامیہ جاری کیا ہے اور سعید نوری کے بیان کے مطابق مہلک وباء کرونا وائرس کی وجہ سے پوری دنیا کو سخت تکلیفیں اٹھانی پڑی ہیں ،خاص طور پر مسلمانوں کو ان کے مذہبی امور کی انجام دہی میں بڑی دشواریاں پیش آئی ہیں،جس میں سب سے اہم پنچوقتہ نماز باجماعت کا مسئلہ تھا جس پر انتظامیہ نے پانچ افراد سے زائد پر روک لگا رکھی تھی تقریباً 8ماہ کے بعد حکومت مہاراشٹر نے ایک بڑا فیصلہ لیتے ہوئے مساجد و درگاہ کو کھولنے کی اجازت دی ہے۔


سعید نوری نے کہاکہ حکومت کافیصلہ مسلمانوں کے لیے خوش آئند ہے۔جس کیلئے ہم سب کو پہلے رب کریم کا فضل خاص جان کر سجدہ شکر بجا لانا چاہئے اور نبی رحمت صلی اللّٰہ علیہ وسلم کی بارگاہ ناز میں ہدیہ درود و سلام نذر کرنا چاہیے،جن کے صدقے پر ہمیں اللّٰہ رب العزت کے گھر میں سجدہ ریز ہونے کا شرف حاصل ہوا ہے۔

اس موقع پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے رضا اکیڈمی کے چیئرمین محمد سعید نوری نے کہا کہ مسلم امہ کو اپنے رب کی رحمت پر بھروسہ رکھنا چاہیے،وہ کبھی بھی اپنے بندوں کو مایوس نہیں کرتایقیناً ہم لاک ڈاؤن کی وجہ سے اجتماعی طور پر مساجد و مقابر سے دور رہے ،جسے ایک مشکل دورکہہ سکتے ہیں.لہذا 16 نومبر سے مساجد و درگاہیں کھل رہی ہیں،لوگ اب اجتماعی طور پر چند احتیاطی تدابیر کے ساتھ آزادی سے نماز باجماعت وزیارت مزارات اولیاء کرسکتے ہیں لہذا.سب سے پہلے اس خوشی کے موقع پر دورکعت نماز نفل شکرانے کے طور پر ادا کریں اور رب قدیر کی بارگاہ میں مکمل طور پر اس بیماری کے خاتمے کی دعاء کریں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔