ریلائنس-برٹش پٹرولیم جوائنٹ وینچر کا کمال، 5 برسوں میں 60 ہزار نئی ملازمتیں

ریلائنس کے پاس ابھی 1400 خردہ فروشی کے مراکز ہیں۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزار کرنے کا منصوبہ ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: مکیش امبانی نے ریلائنس انڈسٹریز کو قرض سے آزاد کرنے کے بعد اب اپنے کاروبار کو مزید تیزی سے بڑھانے کے منصوبے کو حتمی شکل دیتے ہوئے اور برٹش پٹرولیم (بی پی) کے ساتھ مل کر ہندوستانی مارکیٹ میں ایندھن اور طیارہ ایندھن کی خردہ فروشی کے لئے ریلائنس-بی پی موبلٹی لمیٹڈ (آر بی ایم ایل) نے ایک جوائنٹ وینچر تشکیل دی ہے جو اگلے پانچ برسوں میں 60 ہزار روزگار کے مواقع پیدا کرے گا۔

ریلائنس کے پاس ابھی 1400 خردہ فروشی کے مراکز ہیں۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزا ر کرنے کا منصوبہ ہے۔ ان کے کھل جانے پر 60 ہزار نئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ فی الحال یہ 20 ہزار ہیں جو بڑھ کر 80 ہزار تک ہوجا ئیں گے۔ ری برانڈ نگ کے تحت یہ اسٹیشن جیو- بی پی برانڈ کے تحت قائم کیے جائیں گے۔ طیارہ ایندھن کے لئے اگلے چند برسوں میں اپنی رسائی 30 سے ​​45 ہوائی اڈوں تک کرنا ہے۔

گزشتہ اگست میں دونوں کمپنیوں نے جوائنٹ وینچر بنانے کا اعلان کیا تھا۔ اب اس کو حتمی شکل دی جائے گی۔ بیان میں کہا گیا کہ جیو بی پی برانڈ کے تحت اس جوائنٹ وینچر کا مقصد ملک کے ایندھن اور متحرک مارکیٹوں میں ایک بڑی کمپنی بنانا ہے۔ جیو ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کے ذریعے 21 ریاستوں میں ریلائنس کی موجودگی اور اس کے لاکھوں صارفین اس سے مستفید ہوں گے۔

جوائنٹ وینچر کے تحت بی پی اپنے اعلی معیار والے ایندھن، لبریکنٹس، خردہ اور لو کاربن موبلٹی کا استعمال کرے گا۔ آر بی ایم ایل نے دیگر قانونی منظوری کے ساتھ ٹرانسپورٹ ایندھن کے مارکیٹنگ کے حقوق حاصل کرلیے ہیں ۔ بیان کے مطابق آئندہ 20 برسوں میں یہ دنیا میں ملک سب سے تیزی سے بڑھنے والا ایندھن کا بازار بن سکتا ہے۔ ملک میں مسافر کاروں کی تعداد میں تقریبا چھ گنا اضافہ ہونے کا اندزہ ہے۔

مشترکہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ایندھن اور ٹرانسپورٹ کے شعبے کے نئے جوائنٹ وینچر ریلائنس بی پی موبلٹی نے آپریشن کا آغاز کردیا ہے۔ بیان کے مطابق ’’ 2018 میں ابتدائی معاہدے کے بعد بی پی اور ریلائنس نے سودے کو منصوبہ بندی کے حساب سے مکمل کرنے کے لئے پچھلے کچھ چیلینجنگ مہینوں کے دوران مل جل کر کام کیا ہے‘‘ ۔

فی الحال ملک میں ایندھن کی خردہ فروشی میں پبلک سیکٹر کی تیل کمپنیاں غالب ہیں۔ ملک میں مجموعی 69392 پٹرول پمپوں میں سے زیادہ تر ان ہی کے ہیں۔ سرکاری کمپنوں انڈین آئل کارپوریشن لمیٹڈ (آئی او سی ایل)، بی پی سی ایل اور ایچ پی سی ایل کے پاس 62072 پٹرول پمپ ہیں۔ تینوں کمپنیوں کے پاس ملک کے 256 طیارہ فیول اسٹیشنوں میں سے 224 ہیں۔"

امبانی نے کہا ’’ خردہ اور طیارہ ایندھن میں ملک بھر میں موجودگی کے لئے ریلائنس - بی پی کے ساتھ اپنی مضبوط اور قیمتی شراکت داری کو بڑھا رہی ہے۔ آر بی ایم ایل کا مقصد متحرک اور کم کاربن والے حل میں سرخیل کپمنی بنانا ہے۔ ڈیجیٹل اور ٹیکنالوجی کے ساتھ ہندوستانی صارفین کے لئے صاف اور سستا متادل فراہم کرنا ہمارا مقصد ہے‘‘۔

Published: 10 Jul 2020, 5:30 PM
next