راجیہ سبھا کی خصوصی استحقاق کمیٹی نے راگھو چڈھا سے مانگی رپورٹ، اگلی میٹنگ 8 نومبر کو

راجیہ سبھا میں گزشتہ 11 اگست کو پیوش گویل نے ایک تجویز پیش کی تھی، مجوزہ سلیکشن کمیٹی میں کچھ اراکین کے نام ان کی اجازت کے بغیر شامل کرنے پر عآپ لیڈر کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

<div class="paragraphs"><p>راگھو چڈھا / آئی اے این ایس</p></div>

راگھو چڈھا / آئی اے این ایس

user

قومی آوازبیورو

آج راجیہ سبھا خصوصی استحقاق کمیٹی کی میٹنگ میں عآپ رکن پارلیمنٹ راگھو چڈھا سے منسلک معاملوں سمیت کئی اہم ایشوز پر تبادلہ خیال ہوا۔ کمیٹی نے راگھو چڈھا سے 7 نومبر تک پورے معاملے کی رپورٹ مانگی ہے۔ میٹنگ کے دوران اراکین نے خصوصی استحقاق کی خلاف ورزی کے معاملوں میں کمیٹی کی رپورٹ پر فوری کارروائی کرنے اور اسے حتمی شکل دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ رپورٹ کونسل آف اسٹیٹس کے سامنے پیش کی جائے گی۔ اس معاملے میں راجیہ سبھا کی خصوصی استحقاق کمیٹی کی آئندہ میٹنگ 8 نومبر کو طلب کی گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ راجیہ سبھا میں گزشتہ 11 اگست کو ایوان کے لیڈر پیوش گویل نے ایک قرارداد پیش کیا تھا۔ اس قرارداد میں مجوزہ سلیکشن کمیٹی میں کچھ اراکین کے نام ان کے اتفاق کے بغیر شامل کرنے پر عآپ لیڈر راگھو چڈھا کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ راجیہ سبھا سے قرارداد پاس ہونے کے بعد چڈھا کو خصوصی استحقاق کمیٹی کی رپورٹ زیر التوا رہنے تک ’اصولوں کی خلاف ورزی، بے ضابطگی، ضدی رویہ اور ہتک آمیز روش‘ کے لیے مانسون اجلاس کے آخری دن معطل کر دیا گیا تھا۔


دوسری طرف عآپ راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ کی بھی مشکلات کم ہوتی نظر نہیں آ رہی ہیں۔ انھیں راجیہ سبھا کے چیئرمین جگدیپ دھنکھڑ کے ذریعہ پارلیمنٹ کے پورے مانسون اجلاس کے لیے معطل کر دیا گیا ہے۔ راجیہ سبھا کی طرف سے پہلے ہی کہا جا چکا ہے کہ خصوصی استحقاق کمیٹی کی جانچ تک سنجے سنگھ راجیہ سبھا سے معطل رہیں گے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;