راہل گاندھی نے وائناڈ سے داخل کیا پرچہ نامزدگی، بہن پرینکا گاندھی کے ساتھ روڈ شو کیا

کانگریس لیڈر راہل گاندھی وائناڈ سے موجودہ رکن پارلیمنٹ ہیں اور انہوں نے اس لوک سبھا الیکشن میں بھی اس حلقے کا انتخاب کیا ہے

<div class="paragraphs"><p>تصویر ویڈیو گریب</p></div>

تصویر ویڈیو گریب

user

قومی آوازبیورو

کیرالہ کے وایناڈ سے کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے بدھ (3 اپریل) کو لوک سبھا انتخابات 2024 کے لیے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کر دیا۔ اس سے پہلے انہوں نے ایک روڈ شو کیا جس میں کانگریس جنرل سکریٹری اور ان کی بہن پرینکا گاندھی بھی ان کے ساتھ موجود تھیں۔

راہل گاندھی نے وائناڈ سے داخل کیا پرچہ نامزدگی، بہن پرینکا گاندھی کے ساتھ روڈ شو کیا

راہل گاندھی نے 2019 کے انتخابات میں وائناڈ سیٹ سے چار لاکھ سے زیادہ ووٹوں کے بڑے فرق سے کامیابی حاصل کی تھی۔ راہل گاندھی ہیلی کاپٹر کے ذریعہ وائناڈ کے ایک گاؤں موپے ناد پہنچے اور سڑک کے ذریعے کلپیٹا گئے۔ پارٹی نے کہا کہ انہوں نے پرینکا گاندھی اور کے سی وینوگوپال، دیپا داس، کنہیا کمار اور ریاستی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر وی ڈی ستیسن اور کے پی سی سی کے ورکنگ صدر ایم ایم حسن کے ساتھ کلپٹا سے صبح 11 بجے کے قریب روڈ شو شروع کیا۔


اس دوران راہل گاندھی نے کہا، ’’آپ کا ایم پی بننا میرے لیے فخر کی بات ہے، میں آپ سب کو اپنی چھوٹی بہن پرینکا کی طرح سمجھتا ہوں۔ یہاں جنگلی جانوروں کے شکار بنتے انسانوں کا ایشو ہے۔ میڈیکل کالج کا بھی مسئلہ ہے، میں نے تمام اٹھائے گئے مسائل پوچھے ہیں، وزیر اعلیٰ کو خط لکھا لیکن کچھ نہیں ہوا، جب مرکز اور کیرالہ میں ہماری حکومت ہوگی تو ہم آپ کے تمام مسائل حل کریں گے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ یو ڈی ایف ہو یا ایل ڈی ایف، سب ایک ہیں۔ میرے خاندان کی طرح۔ چاہے نظریات کا فرق ہی کیوں نہ ہو۔ پچھلے پانچ سالوں میں میں نے محسوس کیا ہے کہ آپ سے بہت کچھ سیکھنے کو ملا ہے۔

روڈ شو میں کانگریس کے ہزاروں کارکنوں اور حامیوں نے شرکت کی۔ پارٹی نے کہا کہ روڈ شو سول اسٹیشن کے قریب ختم ہوا، جس کے بعد راہل گاندھی نے اپنے کاغذات نامزدگی ضلع کلکٹر کے پاس جمع کرائے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے وائناڈ میں راہل گاندھی کے خلاف کے کے سریندرن کو میدان میں اتارا گیا ہے۔ لوک سبھا انتخابات 2024 کے دوسرے مرحلے میں 26 اپریل کو وایناڈ میں ووٹنگ ہونی ہے۔ اس تاریخ کو 13 ریاستوں میں 89 سیٹوں پر ووٹنگ ہوگی۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


/* */