وزیر اعلیٰ پنجاب چرنجیت سنگھ چنی کا اپنی حفاظت میں کمی کا اعلان، کہا- ’اپنے لوگوں سے مجھے کیسا خطرہ!‘

چنی کے مطابق دیگر لیڈران کی حفاظت جتنے اہلکار سے ہو سکتی ہے اتنے ہی سیکورٹی اہلکار ان کی حفاظت پر بھی مامور کئے جائیں اور وہ حفاظت کے نام پر بے وجہ کا لاؤ لشکر ساتھ لے کر نہیں چلیں گے

چرنجیت سنگھ چنی / سوشل میڈیا
چرنجیت سنگھ چنی / سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

چنڈی گڑھ: پنجاب کے نو منتخب وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی نے وی آئی پی کلچر کو ختم کرنے کے اشارے دیتے ہوئے اپنی حفاظت کو کم کرنے کی ہدایت جاری کر دی۔ انہوں نے کہا کہ وہ بھی عوام کی طرح ہی ہیں اور انہی میں سے ایک ہیں، لہذا اپنے ہی بھائیوں سے حفاظت کے لئے انہیں ایک ہزار سیکورٹی اہلکار کی فوج کی ضرورت نہیں ہے۔

دفتر وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی نے اپنی حفاظت کو کم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا، ’’میں آپ سب لوگوں میں سے ہی ایک ہوں اور مجھے اپنے ہی بھائیوں سے بچانے کے لئے ایک ہزار سیکورٹی اہلکاروں کی فوض کی ضرورت نہیں ہے۔ اپنے ہی لوگوں سے مجھے کیسا خطرہ!‘‘


غورطلب ہے کہ وزیر اعلیٰ چرنجیت سنگھ چنی نے اپنی حلف برداری تقریب کے بعد خود کو عام آدمی قرار دیا تھا۔ جس سے یہ واضح ہو گیا تھا کہ ان کا زور وی آئی پی کلچر کو ختم کرنے پر رہے گا۔ چنی کے مطابق دیگر لیڈران کی حفاظت جتنے اہلکار سے ہو سکتی ہے اتنے ہی سیکورٹی اہلکار ان کی حفاظت پر بھی مامور کئے جائیں اور وہ حفاظت کے نام پر بے وجہ کا لاؤ لشکر ساتھ لے کر نہیں چلیں گے۔

وزیر اعلیٰ چنی کے اس فیصلے کے بعد اب پنجاب میں دیگر لیڈران کی حفاظت کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ سکھجندر سنگھ رندھاوا نے اس کی اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ نے تمام لیڈران اور ریاست میں دیگر افراد کو حاصل رہی حفاظت کا جائزہ لینے کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کی کانگریس حکومت وی آئی پی کلچر کو پوری طرح ختم کر دے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔