کورونا کی تیسری لہر کا خوف، وزیر اعظم نے صورتحال کا جائزہ لیا

وزیر اعظم نے 'کووڈ ایمرجنسی پیکیج - II' کے تحت بچوں کے لیے ہسپتالوں میں بستروں کی گنجائش اور دیگر سہولیات میں اضافے کی صورتحال کا جائزہ لیا۔

علامتی فائل تصویر آئی اے این ایس
علامتی فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کچھ ریاستوں میں کورونا انفیکشن معاملوں کی تشویشناک صورتحال اور کورونا کی تیسری لہر کی آمد کے خوف کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے آج ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ میں صورتحال کا جائزہ لیا اور ریاستوں سے کہا کہ وہ اس سے نمٹنے کے لیے کثیر الجہتی حکمت عملی پر توجہ دیں۔

اس دوران وزیر اعظم نے ملک میں صحت کے بنیادی ڈھانچے کی سہولیات اور تیاریوں ، طبی آکسیجن کی دستیابی اور ویکسین کی پیداوار، فراہمی اور تقسیم پر خصوصی طور پر تبادلہ خیال کیا۔ میٹنگ میں بنیادی طور پر ان ریاستوں کے بارے میں بات چیت کی گئی جن میں کورونا انفیکشن جیسے مہاراشٹر اور کیرالہ میں زیادہ معاملے ہیں۔ وزیراعظم کو پورے ملک کی ہر ضلع کے تعلق سے صورتحال اور وہاں کی جانے والی تحقیقات اور دیگر اقدامات کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔


مسٹر مودی نے وائرس کی نئی اقسام کو ٹریک کرنے کے لیے جینوم اسکیننگ کی ضرورت پر زور دیا۔ ریاستوں سے کہا گیا ہے کہ وہ وائرس کی نئے ویریئنٹ کے بارے میں ڈیٹا متعلقہ ایجنسیوں اور اداروں کے ساتھ شیئر کریں۔

وزیر اعظم نے 'کووڈ ایمرجنسی پیکیج - II' کے تحت بچوں کے لیے ہسپتالوں میں بستروں کی گنجائش اور دیگر سہولیات میں اضافے کی صورتحال کا جائزہ لیا۔ ریاستوں کو مشورہ دیا گیا کہ وہ دیہی علاقوں میں بنیادی دیکھ بھال اور بلاک سطح کے صحت کے بنیادی ڈھانچے کو ضروری سہولیات سے آراستہ کریں۔ ریاستوں سے کہا گیا ہے کہ وہ ضلع سطح پر کورونا اور میوکورمیکوسس کے انتظام میں استعمال ہونے والی ادویات کے لیے بفر اسٹاک برقرار رکھیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔