آبادی کنٹرول قانون آر ایس ایس کا ایجنڈا: آرجے ڈی

ملک میں ریاست میں کوئی بھی قانون بننے سےقبل اس کے لئے پہلے کل جماعتی میٹنگ طلب کر کے سب کی رائے لی جانی چاہئے ۔ اس کے بعد جو بھی رائے بنے ویسا کام ہونا چاہئے ۔

آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کی فائل تصویر آئی اے این ایس
آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کی فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

بہار کی اہم اپوزیشن راشٹریہ جنتادل ( آرجے ڈی ) نے اتر پردیش میں آبادی کنٹرول قانون نافذ کرنے کے فیصلے کو راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس ) کا ایجنڈہ قرار دیا ہے ۔

آرجے ڈی کے چیف ترجمان اور پارٹی کے منیر سے رکن اسمبلی بھائی ویریندر نے واضح طور سے کہا ہےکہ یہ آر ایس ایس کا ایجنڈاہے ۔ ایک فرقہ کے لوگوں کے خلاف اس طرح کا قانون بناکر گھیرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اگر کوئی بھی قانون ملک میں یا پھر ریاست میں بنے تو اس کے لئے پہلے کل جماعتی میٹنگ طلب کر کے سب کی رائے لی جانی چاہئے ۔ اس کے بعد جو بھی رائے بنے ویسا کام ہونا چاہئے ۔


آرجے ڈی رکن اسمبلی نے کہاکہ فی الحال آبادی کنٹرول پر کوئی قانون نہیں بننا چاہئے ۔ وزیراعلیٰ نتیش کمار نے ٹھیک ہی کہا ہے پہلے لوگوں کو تعلیم یافتہ ہونا چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ مسٹر کمار کی بات تو درست ہے لیکن گزشتہ پندرہ سالوں سے وہ وزیراعلیٰ ہیں اور انہوں نے ریاست میں تعلیم کا بیڑہ غرق کردیا ہے ۔ ریاست میں تعلیم کی سطح مزید گر گئی ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیاکہ مسٹر کمار آر ایس ایس کے ماڈل پر چلنا چاہ رہے ہیں ۔ وزیر اعلیٰ کو واضح طور پر لوگوں کے سامنے آکر کہنا چاہئے کہ وہ اس قانون یا ایسے ماڈل کو بہار میں نافذ نہیں کریںگے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔