پلوامہ کے نام پر ووٹ مانگ کر پھنسے مودی، انتخابی افسر نے بتایا ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی

پی ایم نریندر مودی نے لاتور کی اپنی ریلی میں پہلی بار ووٹ ڈالنے والے ووٹروں سے پلوامہ دہشت گردانہ حملے میں شہید ہوئے اور بالاکوٹ ائیر اسٹرائیک کو انجام دینے والے جوانوں کے نام ووٹ کرنے کی اپیل کی تھی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

وزیر اعظم نریندر مودی کو انتخابی تشہیر میں پلوامہ دہشت گردانہ حملہ اور بالاکوٹ ائیر اسٹرائیک کا تذکرہ کرنا مہنگا پڑ گیا ہے۔ عثمان آباد ضلع انتخابی افسر (ڈی ای او) نے مہاراشٹر کے چیف الیکشن افسر کو سونپی گئی اپنی رپورٹ میں وزیر اعظم کی تقریر کو مسلح افواج سے انتخابی فائدہ حاصل کرنے والا بتایا ہے۔ دراصل پی ایم مودی نے لاتور میں کی گئی اپنی ریلی میں پہلی بار ووٹ ڈالنے والے ووٹروں سے پلوامہ دہشت گردانہ حملے میں شہید ہوئے اور بالاکوٹ ائیر اسٹرائیک کو انجام دینے والے جوانوں کے نام پر ووٹنگ کرنے کی اپیل کی تھی۔ ان کی اس اپیل کو انتخابی کمیشن نے مثالی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی مانتے ہوئے انتخابی فائدہ اٹھانے والا بتایا ہے۔

ذرائع کے مطابق ریاست کے چیف انتخابی افسر کے دفتر نے ڈی ای او کی رپورٹ انتخابی کمیشن کو بھیج دی ہے۔ اگر انتخابی کمیشن بھی پی ایم مودی کی اس تقریر کو انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی تصور کرتا ہے تو مودی پی ایم رہتے ہوئے پہلی بار مثالی ضابطہ اخلاق کی ورزی کے لیے اپنی صفائی پیش کریں گے۔

واضح رہے کہ انتخابی کمیشن نے لوک سبھا انتخابات کی تاریخوں کے اعلان کے ساتھ ہی سیاسی پارٹیوں کو ایک ایڈوائزری بھی جاری کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ وہ انتخابی تشہیر کے دوران فوجی جوانوں اور ان سے جڑی تصویروں کا استعمال بالکل نہ کریں۔ اتنا ہی نہیں، 19 مارچ کو بھی انتخابی کمیشن نے سبھی سیاسی پارٹیوں کو خط لکھ کر یہ ہدایت دی تھی کہ وہ اپنے لیڈروں سے انتخابی تشہیر کے دوران سیکورٹی فورسز اور ان کی سرگرمیوں کا استعمال نہیں کرنے کو کہیں۔ ایسے میں پہلی نظر میں پی ایم مودی کی تقریر اس ایڈوائزری کی خلاف ورزی معلوم پڑتی ہے۔

جہاں تک پی ایم مودی کے بیان کا سوال ہے، تو انھوں نے گزشتہ منگل کو یہ بیان دیا تھا۔ لاتور میں منعقد ریلی میں انھوں نے کہا تھا کہ ’’میں ذرا کہنا چاہتا ہوں میرے فرسٹ ٹائم ووٹروں کو۔ آپ کا پہلا ووٹ پاکستان کے بالاکوٹ میں ائیر اسٹرائیک کرنے والے بہادر جوانوں کے نام ہو سکتا ہے کیا؟ میں میرے فرسٹ ٹائم ووٹر سے کہنا چاہتا ہوں کہ آپ کا پہلا ووٹ پلوامہ میں جو بہادر شہید ہوئے ہیں ان بہادر شہیدوں کے نام آپ کا ووٹ ہو سکتا ہے کیا؟‘‘ ان کے اس بیان کو اپوزیشن پارٹیوں نے مثالی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی بتاتے ہوئے انتخابی کمیشن سے شکایت بھی کی تھی۔