کمل ناتھ حکومت کو گرانے میں پی ایم مودی کا ہاتھ، کسی کو مت بتانا! بی جے پی لیڈر کا اعتراف

کیلاش وجے ورگیہ نے کہا، ’’آپ کسی کو بتانا مت، میں نے آج تک کسی کو نہیں بتایا، پہلی بار اس پلیٹ فارم سے بتا رہا ہوں کہ کمل ناتھ کی حکومت گرانے میں اگر کسی کا اہم کردار تھا تو وہ نریندر مودی کا تھا‘‘

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

بھوپال: بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے اندور میں ایک حیران کن انکشاف کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مارچ 2020 میں کمل ناتھ کی قیادت والی کانگریس حکومت کو گرانے میں نریندر مودی نے اہم کردار ادا کیا۔

اندور میں کسان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیلاش وجے ورگیہ نے کہا، ’’آپ کسی کو بتانا مت، میں نے آج تک کسی کو نہیں بتایا، پہلی بار اس پلیٹ فارم سے بتا رہا ہوں کہ کمل ناتھ کی حکومت گرانے میں اگر کسی کا اہم کردار تھا تو وہ نریندر مودی کا تھا، دھرمندر پردھان کا نہیں۔‘‘

جس پلیٹ فارم سے وجے ورگیہ نے یہ بیان دیا وہاں مرکزی پٹرولیم اور قدرتی گیس کے وزیر دھرمندر پردھان اور مدھیہ پردیش کے وزیر داخلہ نروتم مشرا ھی موجود تھے۔ جون کے مہینے میں وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے پارٹی کارکنان سے مبینہ طور پر یہ کہا تھا کہ بی جے پی کی مرکزی قیادت نے کانگریس حکومت کو گرانے کا فیصلہ کیا ہے۔


وجے ورگیہ کی اس سنسنی خیز انکشاف کی ویڈیو کو ٹوئٹ کرتے ہوئے کانگریس ترجمان نریندر سلوجا نے کہا، ’’اب یہ واضح ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی ہی ہیں جو آئینی طور پر منتخب حکومتوں کو غیر آئینی طریقوں سے گراتے ہیں۔ کانگریس شروع سے ہی یہ کہہ رہی ہے، لیکن بی جے پی کمل ناتھ حکومت کے گرنے کے لئے کانگریس کے اندرونی جھگڑے کو ذمہ دار ٹھہراتی ہے۔ اب بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے حقیقت بیان کر دی ہے۔‘‘

خیال رہے کہ مارچ میں جیوتیرادیہ سندھیا کے وفادار 22 ارکان اسمبلی (بشمول 6 وزرا) نے اسمبلی کی رکیت سے استعفی دے دیا تھا اور کانگریس کی ہاتھ بھی چھوڑ دیا تھا۔ اس کے نتیجہ میں مدھیہ پردیشم یں 15 مہینے پرانی کمل ناتھ حکومت گر گئی تھی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔