سنجیو بھٹ کی اہلیہ کی عرضی سپریم کورٹ میں خارج

گجرات کیڈر کے سابق آئی پی ایس سنجیو بھٹ کی اہلیہ کی عرضی یہ کہتے ہوئے خارج کردی گئی کہ سنجیو بھٹ اگر چاہیں تو راحت کے لئے ہائی کورٹ کا رخ کرسکتے ہیں۔

سپریم کورٹ کی فائل تصویر 
سپریم کورٹ کی فائل تصویر
user

یو این آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے 22 سال پرانے ایک معاملے میں انڈین پولس سروس (آئی پی ایس) کے سابق افسر سنجیو بھٹ کی اہلیہ شویتا بھٹ کی عرضی جمعرات کو خارج کردی۔

چیف جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس کورین جوزف کی بینچ نے گجرات کیڈر کے سابق آئی پی ایس افسر کی اہلیہ کی عرضی یہ کہتے ہوئے خارج کردی کہ سنجیو بھٹ اگر چاہیں تو کسی بھی قسم کی راحت کے لئے ہائی کورٹ کا رخ کرسکتے ہیں۔

عرضی گزار نے اپنی عرضی میں اپنے شوہر کے خلاف چل رہی جانچ کو چیلنج کیا تھا۔ انہوں نے الزام لگایا تھا کہ ان کے شوہر کو سپریم کورٹ میں عرضی دائر نہیں کرنے دی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ سنجیو بھٹ کو گجرات سی آئی ڈی نے 5 ستمبر کو گرفتار کیاتھا۔ یہ گرفتاری 1996 کے ایک معاملے میں ہوئی ہے جس میں راجستھان کے ایک وکیل کو مبینہ طور پر منشیات کے معاملے میں پھنسایا گیا تھا۔ اس وقت سنجیو بھٹ گجرات کے بناس کانٹھا کے ایس پی تھے۔