نفرت پھیلانے والوں کا بنڈل محبت کے گٹھر سے بہت چھوٹا: دگ وجے

نفرت پھیلانے والوں کو محبت کے راستے پر لانے کے لئے بے خوف ہوکر سب کو کوشش کرنی چاہیے۔ یہ مشکل ضرورہے، لیکن ناممکن نہیں۔ آخر میں فتح محبت اور بھائی چارے کی ہی ہوگی۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کانگریس کے سینئر لیڈردگ وجے سنگھ نے مشہورمصنف ڈاکٹر راہی معصوم رضا کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ ملک میں نفرت پھیلانے والوں کا بنڈل پیارمحبت کے گٹھر سے بہت چھوٹا ہے اورآخر کار محبت اور بھائی چارے کی ہی جیت ہوگی ۔ دگ وجے سنگھ نے اپنے سلسلہ وار ٹویٹس میں کہا کہ ڈاکٹر راہی معصوم رضا کو بی آر چوپڑا نے مہابھارت ٹی وی سیریل کی اسکرپٹ لکھنے کو کہا پہلے تو مسٹر رضا نے انکار کردیا، لیکن اگلے دن یہ خبر اخبارات میں شائع ہوگئی۔ ہزاروں لوگوں نے مسٹر چوپڑا کو خط لکھاکہ کیا انہیں مہابھارت لکھوانے کے لیےایک مسلمان ہی ملا ہے۔ مسٹر چوپڑا نے تمام خطوط مسٹر رضا کو بھیج دئے۔ تمام خطوط دیکھنے کے بعد، مسٹررضا نے مسٹر چوپڑا سے کہا کہ اب وہ ہی مہابھارت لکھیں گے، کیونکہ وہ گنگا کے بیٹے ہیں۔

مسٹر سنگھ نے کہا کہ مسٹر رضا نے جب ٹی وی سیریل مہابھارت لکھا تو ان کے گھر بھی خطوط کے انبار لگ گئے۔ لوگوں نے تعریفیں کرتے ہوئے خوب دعائیں دیں۔ اس کے پاس خطوط کے کئی گٹھربن گئے، لیکن ایک بہت چھوٹا سا بنڈل ان کی میز کے کنارے الگ پڑا تھا۔ جب کسی نے مسٹررضا سے اس کی وجہ پوچھی تو جواب ملا کہ یہ وہ خطوط ہیں، جن میں انہیں براکہاگیاتھا۔ کچھ ہندو اس بات پر ناراض تھے کہ انہوں نے مسلمان ہو کر مہابھارت لکھنے کی ہمت کیسے کی اور کچھ مسلمان ان سے اس لئے ناراض تھے کہ انہوں نے ہندوؤں کی کتاب کیوں لکھی۔


سابق وزیر اعلیٰ مسٹر سنگھ نے اس کے بعد لکھا ہے، 'لیکن راہی صاحب کا ماننا تھا کہ یہ چھوٹا بنڈل دراصل مجھے حوصلہ دیتا ہے کہ ملک میں برے لوگ کتنے کم ہیں....!'

اس کے بعد مسٹر سنگھ نے کہا کہ آج بھی نفرت پھیلانے والوں کی بنڈل پیار محبت کے گٹھر سے بہت چھوٹی ہے، لیکن نفرت پھیلانے والوں کو محبت کے راستے پر لانے کے لئے بے خوف ہوکر سب کو کوشش کرنی چاہیے۔ یہ مشکل ضرورہے، لیکن ناممکن نہیں۔ آخر میں فتح محبت اور بھائی چارے کی ہی ہوگی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔