جموں کشمیر کے لوگوں کو عوامی منتخب حکومت سے محروم نہیں رکھا جاسکتا: عمر عبداللہ

نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے کہا کہ وزیر داخلہ کی اس دلیل سے جموں کشمیر کے لوگوں کو ایک منتخب حکومت سے محروم نہیں رکھا جاسکتا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

سری نگر، 28 جون (یو این آئی) مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے پارلیمنٹ میں بیان کہ جموں کشمیر میں زیادہ مرتبہ کانگریس کے دور حکومت میں صدر راج نافذ رہا ہے، کے ردعمل میں نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے کہا کہ وزیر داخلہ کی اس دلیل سے جموں کشمیر کے لوگوں کو ایک منتخب حکومت سے محروم نہیں رکھا جاسکتا۔

بتادیں کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے جمعہ کے روز پارلیمنٹ میں جموں کشمیر میں صدر راج کے نفاذ میں توسیع کرنے کی تجویز پیش کرتے ہوئے کہا، ’وہ کہتے ہیں کہ ہم جموں کشمیر میں جمہوریت کو دبا رہے ہیں، آج تک جموں کشمیر میں 132 مرتبہ صدر راج نافذ ہوا ہے اور اس میں سے 93 مرتبہ کانگریس نے ریاست میں صدر راج نافذ کیا ہے، اب یہ لوگ ہمیں جمہوریت کا سبق سکھا رہے ہیں۔‘

مرکزی وزیر داخلہ کے اس بیان کے ردعمل میں نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا: 'وزیر خزانہ کی دلیل یہ ہے کہ چونکہ کانگریس نے سب سے زیادہ مرتبہ دفعہ 356 کا استعمال کیا ہے لہٰذا مودی حکومت جموں کشمیر کے لوگوں کو منتخب حکومت سے محروم رکھنے میں حق بجانب ہے، یہ ایک ناقابل قبول دلیل ہے'۔

قابل ذکر ہے جموں کشمیر میں سال گزشتہ ماہ جون میں پی ڈی پی اور بی جے پی کی حکومت پاش پاش ہونے کے بعد گورنر راج نافذ ہوا اور فی الوقت ریاست میں صدر راج نافذ ہے۔ تاہم ریاست میں سالانہ امرناتھ یاترا کے اختتام کے بعد اسمبلی انتخابات متوقع ہیں۔