جموں و کشمیر کے عوام جمہوری حقوق سے محروم: فاروق عبداللہ

جموں و کشمیر کے عوام اس وقت جمہوریت کے حق سے بھی محروم ہیں اور جمہوریت کے فقدان کا براہ راست منفی اثر عام لوگوں پر پڑ رہا ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ جموں و کشمیر کی عوام اس وقت جمہوری حقوق سے محروم ہے اور جمہوریت کے فقدان کا براہ راست منفی اثر عام لوگوں پر پڑ رہا ہے۔انہوں نے یہ باتیں جمعہ کو اپنی رہائش گاہ پر فورم برائے انسانی حقوق جموں و کشمیر کے ایک اعلیٰ سطحی وفد سے ملاقات کے دوران کہی ہیں۔

وفد میں جسٹس اے پی شاہ، سابق مصالحت کار رادھا کمار اور معروف حقوق اطفال کارکن اناکشی گنگولی بھی شامل تھیں جبکہ اس موقع پر نیشنل کانفرنس کے کئی سینئر پارٹی رہنما بھی موجود تھے۔


نیشنل کانفرنس ترجمان کے مطابق اس موقع پر جموں و کشمیر کی سیاسی صورتحال، زمینی سطح لوگوں کو درپیش مشکلات، 5 اگست 2019 کے بعد کے حالات، گزشتہ دو سال سے جاری غیر یقینیت اور بے چینی اور خصوصاً انسانی حقوق کے بارے میں تبادلہ خیالات ہوا ہے۔

فاروق عبداللہ نے وفد سے کہا کہ نیشنل کانفرنس جموں و کشمیر کے عوام کے حقوق کی پاسبان جماعت رہی ہے اور یہ جماعت آج بھی یہاں کے عوام کے حقوق کے لئے برسرجہد ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کی عوام اس وقت جمہوریت کے حق سے بھی محروم ہیں اور جمہوریت کے فقدان کا براہ راست منفی اثر عام لوگوں پر پڑ رہا ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;