آسام: بی جے پی حکومت کا فیصلہ، 2 سے زیادہ بچے ہونے پر نہیں ملے گی سرکاری ملازمت

خبروں کے مطابق پیر کے روز آسام کی کابینہ میٹنگ میں فیصلہ لیا گیا ہے کہ 2 بچوں سے زیادہ کی پیدائش پر اب والدین کو سرکاری ملازمت نہیں ملے گی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

ملک میں بڑھتی آبادی پر قابو پانے کے لیے لوگوں میں کئی طرح کی بیداری مہم چلائی جا رہی ہے۔ اس درمیان آسام کی بی جے پی حکومت نے ایک بڑا قدم اٹھایا ہے جس کو لے کر لوگ پریشان ہیں۔ دراصل آسام حکومت نے بڑھتی آبادی پر کنٹرول کرنے کے لیے فیصلہ کیا ہے کہ یکم جنوری 2021 کے بعد سے جن گھروں میں 2 سے زائد بچے پیدا ہوں گے، ان والدین کو سرکاری ملازمت نہیں ملے گی۔

میڈیا ذرائع کے مطابق پیر کے روز آسام کی کابینہ میٹنگ میں فیصلہ لیا گیا ہے کہ 2 بچوں سے زیادہ کی پیدائش پر اب والدین کو سرکاری ملازمت نہیں ملے گی۔ اس سلسلے میں ایک بیان بھی جاری کر دیا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ چھوٹی فیملی کی ایک حد طے کی گئی ہے اور یکم جنوری 2021 سے دو سے زیادہ بچے والوں کو سرکاری ملازمت نہیں دی جائے گی۔

قابل ذکر ہے کہ اس مرتبہ 15 اگست کے موقع پر پی ایم نریندر مودی نے لال قلعہ سے بڑھتی آبادی پر فکر کا اظہار کیا تھا۔ انھوں نے کہا تھا کہ تیزی سے بڑھتی آبادی پر ہمیں آنے والی نسل کے لیے سوچنا ہوگا۔ پی ایم مودی نے یہ بھی کہا تھا کہ چھوٹی فیملی سے گھر میں خوشی کا ماحول رہتا ہے اور ساتھ ہی ملک کا بھی بھلا ہوتا ہے۔

Published: 22 Oct 2019, 12:11 PM