پٹنہ: مودی کے وزیر اشونی چوبے کو مخالفت کا سامنا، نوجوان نے سیاہی پھینکی

مودی حکومت میں مرکزی وزیر مملکت اشونی چوبے کو ایک اسپتال میں اس وقت مخالفت کا سامنا کرنا پڑا جب ان پر ایک نوجوان نے سیاہی پھینک دی

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

پٹنہ: مودی حکومت میں مرکزی وزیر مملکت اشونی چوبے کو ایک اسپتال میں اس وقت مخالفت کا سامنا کرنا پڑا جب ان پر ایک نوجوان نے سیاہی پھینک دی۔ سیاہی کے قطرے اشونی چوبے کے کپڑوں اور ان کی گاڑی پر پڑے ہیں۔ وہ پٹنہ کے ایک اسپتال میں زیر علاج ڈینگو بخار میں مبتلا مریضوں کی عیادت کرنے اور اسپتال کا معائنہ کرنے گئے تھے۔

ایک پولس افسر نے بتایا کہ مرکزی وزیر اشونی چوبے منگل کے روز پٹنہ میں واقع پٹنہ میڈیکل کالج اسپتال (ایم ایم سی ایچ) کا معائنہ کرنے کے لئے پہنچے تھے۔ دریں اثنا انہوں نے یہاں پر زیر علاج مریضوں کی عیادت کی۔ مریضوں اور ڈاکٹروں سے ملاقات کے بعد وہ جیسے ہی اسپتال کے احاطہ میں موجود اپنی گاڑی میں بیٹھنے لگے، تبھی ایک نیلی شرٹ پہنے نوجوان نے مرکزی وزیر اشونی چوبے کے اوپر سیاہی پھینک دی اور فرار ہو گیا۔

اس دوران وزیر کے محافظ نے نوجوان کو پکڑنے کے لئے دوڑ لگائی لیکن وہ کامیاب نہ ہو سکا۔ سوشل میڈیا میں اس واقعہ کی ایک ویڈیو وائرل ہو رہی ہے جس میں دو نوجوانوں کو بھاگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

اس کے بعد مشتعل نظر آ رہے اشونی چوبے نے اپنی ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس واقعہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔ انہوں نے کہا، ’’یہ وہی لوگ ہیں جو گندا کام کرتے ہیں۔ کیونکہ انہیں کے اشارے پر یہ کام کیا گیا ہے جو پہلے جرائم کی دنیا میں کافی آگے تھے۔‘‘ اس دوران انہوں نے صحافیوں سے بھی کہا کہ یہ سیاہی صرف ہمارے اوپر ہی نہیں بلکہ آپ کے اوپر بھی پھینکی گئی ہے۔

next